’سٹریٹ ویو ٹیکنالوجی‘ کا اگلا قدم

گوگل تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption آسٹریلیا کی یہ چاکلیٹ کی دکان ابتدائی طور پر اس سروس کا استعمال کرنے والوں میں شامل ہے۔

گوگل نے ایک ایسا تجرباتی منصوبہ شروع کیا ہے جس میں وہ دکانوں اور کاروباری مراکز کے اندر کا منظر اپنے نقشوں پر پیش کرے گا۔

یہ صلاحیت گوگل کی پہلے سے موجود ’سٹریٹ ویو ٹیکنالوجی‘ کا اگلا قدم ہے جس میں پہلے سے صارفین کو کسی منظر کا تین سو ساٹھ زاویے کا نظارہ ملتا تھا۔

پہلے سے موجود اس سروس سے شاکی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ ان کی ذاتیات میں دخل اندازی ہے۔ تاہم گوگل کا کہنا ہے کہ یہ نئی سکیم سراسر رضاکارانہ بنیادوں پر ہو گی۔

گوگل کے ترجمان کا کہنا تھا ’یہ منصوبہ سٹریٹ ویو ٹیکنالوجی کا ایک اور تخلیقی استعمال ہے جس کی مدد سے ان کاروباروں کو مدد ملے گی جو اپنی آن لائن موجودگی قائم رکھنا چاہتے ہیں‘۔

ابتدائی طور پر یہ چند محدود جگہوں کا احاطہ کرے گی جن میں لندن، پیرس، جاپان کے چند شہر، آسٹریلیا، نیوزی لینڈ اور امریکہ شامل ہیں۔

گوگل کے مطابق اس پروگرام کے تحت دکھائی جانے والے کاروباروں میں ریستوران، ہوٹل، دکانیں، ورزش گاہیں اور گاڑیوں کی مرمت کی ورکشاپس شامل ہیں۔

تاہم اس فہرست میں تاحال بڑی مصنوعات، ہسپتال اور وکیلوں کے دفاتر میں شامل نہیں ہیں۔

گوگل نے تمام کاروباری افراد سے کہا ہے کہ اس منصوبے کے لیے تصاویر بنائے جانے سے قبل ہی وہ اپنے صارفین کو آگاہ کردیں۔

گوگل نے وعدہ کیا ہے کہ اگر کسی تصویر میں کوئی خریدار دکھائی دے جاتا ہے تو یا تو اس تصویر کو شامل نہیں کیا جائے گا یا اس میں شکل کو دھندلا کر دیا جائے گا۔

اس فوٹو شوٹ میں بھی تین سو ساٹھ ڈگری کی تصویر لی جائیں گی۔

گوگل کے مطابق اس مقصد کے لیے لی گئی تمام تصویر اس کی ملکیت ہوں گی اور وہ انہیں اپنے دوسرے مقاصد کے لیے بھی استعمال کر سکتا ہے۔

اسی بارے میں