سویوز راکٹ کی ایک اور مہم ناکام

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ناکامی نے چھبیس دسمبر کو ہونے والے سويوز کے اگلے لانچ پر بھی سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔

روس کی جانب سے سويوز راکٹ کی مدد سے خلا میں سیارچوں کی روانگی کی ایک اور کوشش ناکام ہوگئی ہے۔

اس بار سویوز- 2 راکٹ اپنے سیٹلائٹ کو خلا میں بھیجنے میں ناکام رہا اور اطلاعات کے مطابق تباہ ہونے والے راکٹ کا ملبہ مغربی سائبیریا کے شہر توبولسك میں زمین کی فضا میں دوبارہ داخل ہوگیا۔

اگست کے مہینے میں خلائی سیٹشن کو رسد کی فراہمی کے لیے بھیجے جانے والے سويز راکٹ کی تباہی کے بعد اس کی پروازوں کو چھ ہفتے کے لیے روک دیا گیا تھا۔

جمعہ کو بھیجے جانے والا راکٹ میریڈين -فائیو سیٹلائٹ لے کر جا رہا تھا جسے سمندری جہازوں اور ساحلی سٹیشنوں میں مواصلات کے لیے بنایا گیا تھا۔

یہ سویوز راکٹ کی سب سے جدید شکل سويز دو اعشاریہ ایک بی تھی جو انیس سو ساٹھ کی دہائی سے مختلف میدانوں کے میں استعمال ہوتا رہا ہے۔

راکٹ پرواز کے سات منٹ بعد ہی تباہ ہوگیا اور روسی میڈیا نے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ راکٹ کے تیسرے مرحلے میں خرابی ہوئی۔

خبر رساں ایجنسی انٹرفیكس نے روس کے خلائی فوج کے ترجمان الیكسي ذولوتیخن کا حوالہ دیتے ہوئے کہا، ’یہ سیٹلائٹ خلا میں داخل ہونے میں ناکام رہا. سرکاری کمیشن اس حادثے کی وجوہات کی تفتیش کرے گا‘۔

اگست کے ناکام لانچ میں سويوز-یو راکٹ شامل تھا اور اس کی تباہی کی تحقیقات میں پتہ چلا تھا کہ تیسرے مرحلے میں تیل کی لائن بند ہونے سے وہ حادثہ پیش آیا تھا۔

سويوز کے یو اور 2.1 بی فارمیٹ الگ الگ انجن استعمال کرتے ہیں اس لیے اتنی جلدی دونوں واقعات میں کوئی مماثلت تلاش نہیں کی جا سکتی۔

جمعہ کی ناکامی نے چھبیس دسمبر کو ہونے والے سويوز کے اگلے لانچ پر بھی سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔

اسی بارے میں