چین میں مائیکرو بلاگنگ سروس دوبارہ شروع

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption چینی حکام نے سولہ ویب سائٹس کو بند کر دیا تھا

چین میں انٹرنیٹ کے لاکھوں صارفین نے ملک کی دو بڑی مائیکروبلاگنگ ویب سائٹس کی جانب سے سروس کے تین روزہ تعطل کے خاتمے پر ایک مرتبہ پھر پیغام رسانی کا عمل شروع کر دیا ہے۔

مائیکرو بلاگنگ سائٹس ويوو ڈاٹ کام اور ٹيكيوكيو ڈاٹ کام نے تبصروں کی اشاعت سنیچر کو یہ کہتے ہوئے بند کر دی تھی کہ انٹرنیٹ پر بیجنگ میں فوجی بغاوت کی افواہیں پھیلائی جا رہی ہیں۔

اس تعطل کے دوران ویب سائٹس پر شائع کیے گئے ان پیغامات اور تصاویر کو ہٹا دیا گیا جن سے یہ تاثر ملتا تھا کہ ملک میں فوجی بغاوت ہو رہی ہے یا اس کا امکان ہے۔ ان میں وہ تصاویر بھی شامل ہیں جن میں لڑاکا ٹینکوں کو بیجنگ کی سڑکوں پر دوڑتے دکھایا گیا تھا.

ایسی ہی تصاویر کی وجہ سے چین میں حکومت کا تختہ الٹنے کی افواہوں کا بازار گرم ہو گیا تھا جس کے بعد چینی حکام نے سولہ ویب سائٹس کو بند کر دیا تھا اور انٹرنیٹ پر افواہیں پھیلانے کے الزام میں چھ افراد کو حراست میں لیا تھا۔

بیجنگ میں بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ بغاوت کی افواہوں کو اس بات سے تقویت پہنچی کہ چین کے موجودہ حکمران ملک کی کمیونسٹ پارٹی کی قیادت میں رواں سال ہونے والی تبدیلی کے تناظر میں اقتدار کی جنگ میں مصروف ہیں۔

اسی بارے میں