پروں سے گانے والی چڑیا کا راز

میناکن
Image caption میناکن اپنے جوڑے کو لبھانے کے لیے اپنے پروں کو رگڑتا ہے جس سے وائلن جیسی آواز نکلتی ہے۔

سائنسدانوں کے مطابق اپنی پروں کی مدد سے گانے والی چڑیا کے بارے میں ایک تازہ تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ اس کے گانے کا راز اس کی ہڈیوں میں پنہاں ہے۔

یہ جڑے ہوئے پروں والی میناکن کولمبیا اور ایکواڈور کے گھنے بادلوں والے جنگلوں میں رہتی ہے جو اپنے جوڑے کو متوجہ کرنے یا اسے لبھانے کے لیے اپنے پروں کو آپس میں رگڑ کر گیت گاتی ہے۔

امریکہ کی کارن ویل یونیورسٹی کے محققین کی ایک ٹیم نے اس چڑیا کی ہڈیوں کی جانچ کی ہے۔

انہوں تحقیق سے معلوم ہوا کہ اس چڑیا کی ہڈیاں دوسری چڑیوں کے برخلاف زیادہ ٹھوس، گھنی ہیں اور اسی وجہ سے ان سے وائلن کی سی آواز نکلتی ہے۔

کارن ویل یونیورسٹی کے چڑیوں اور مچھلیوں کے میوزیم کے کیوریٹر اور تحقیق کرنے والی ٹیم کی سربراہ کم بوسٹوک اور ان کے رفقاء نے میناکن کے پروں کا سٹی سکین کی مدد سے باریک بینی سے جائزہ لیا۔

ان میں یہ ظاہر ہوا کہ عام طور پر چڑیوں کی ہڈیاں کھوکھلی ہوتی ہیں لیکن جڑے پروں والی میناکن کی ہڈیاں واضح طور پر’وزنی اور سخت‘تھیں۔

ڈاکٹر بوسٹک نے کہا ’چڑیاں عام طور پر زیادہ وزن رکھنا پسند نہیں کرتیں لیکن اگر میناکن کی پر اتنے بڑے ہیں اور ہڈیاں وزنی ہیں تو ان کا آواز نکالنے سے کوئی تعلق ضرور ہوگا۔‘

سائندانوں نے یہ بھی پایا کہ نر میناکن جب اپنی مادہ کو متوجہ کرنے کی کوشش کرتا ہے تو وہ اپنے پروں کو اپنی پشت پر اوپر کی جانب لے جا کر رگڑتا ہے جس سے وائلن کی سی آواز نکلتی ہے۔

Image caption ماندہ میناکن نر میناکنوں سے اپنے لیے جوڑا منتخب کرتی ہے

ڈاکٹر بوسٹوک کا ماننا ہے کہ کسی ٹھوس چیز سے کانپتے ہوئے پروں کے رگڑنے سے یہ آواز نکلتی ہے اور ہڈیوں کے ٹھوس پن کی وجہ سے وہ اس میں ضم نہیں ہوتی۔

ڈاکٹر بوسٹوک پہلے محقق ہیں جنہوں نے میناکن کی انوکھی آواز کے طلسم کے پیچھے جھانکنے کی کوشش کی ہے اور اس طرح چڑیوں کے ایک نئے طرح کے گیت کو سامنے لانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

میناکن طیور کی پینتالیس اقسام ہیں اور یہ بطور خا جنگلوں میں پائی جاتی ہے۔

نر میناکن اپنا زیادہ تر وقت نروں کے جھنڈ میں گذارتے ہیں جہاں وہ اپنا اپنا ہنر دکھاتے ہیں اور وہاں مادہ میناکن آ کر ان میں سے اپنے جوڑے کا انتخاب کرتی ہیں۔

میناکن کی ہر ایک قسم کا اپنے جوڑے کو لبھانے کا اور ان سے رشتہ قائم کرنے کا الگ ہی انداز ہوتا ہے۔

نرمیناکن اپنے چمکیلے پروں کا مظاہرہ کرنے کے لیے مشہور ہیں۔

اسی بارے میں