افریقی ملک نمیبیا میں پانی نکل آیا

نمیبیا میں پانی کی تلاش
Image caption خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ پانی کے لیے غیر قانونی کھدائی سے ذخیرہ خراب ہو سکتا ہے

افریقہ کے ملک نمیبیا میں پانی کے وسیع ذخائر دریافت ہوئے ہیں جن کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ یہ صدیوں تک ختم نہیں ہوں گے۔اندازوں کے مطابق ملک میں پانی کی موجودہ مانگ کو سامنے رکھا جائے تو یہ ذخیرہ چار سو سال تک کام دے سکتا ہے۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ پانی دس ہزار سال پرانا ہے لیکن پینے کے لیے آج کے کسی بھی ذخیرے سے زیادہ صاف ہے۔

شمالی نمیبیا میں اس وقت صورتحال یہ ہے کہ کچھ لوگوں کے پاس پینے کے لیے بہت پانی ہے تو کچھ کے پاس بالکل کم ہے۔علاقے کے آٹھ لاکھ لوگ انگلولا سے آنے والی چالیس سال پرانی ایک نہر سے پانی حاصل کرتے ہیں۔

پانی کا نیا ذخیرہ انگلولا اور نمیبیا کی سرحد کے نیچے بہتا ہے۔ نمیبیا کی حدود کے نیچے اس کا رقبہ ستر کلومیٹر ضرب چالیس کلومیٹر ہے۔

پانی کی تلاش میں مصروف پراجیکٹ مینیجر جرمنی کے مارٹ کوِینگر کے مطابق یہ بہت بڑا ذخیرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ کوشش کر رہے ہیں کہ زمین سے اتنا ہی پانی نکالا جائے جتنا اس میں واپس جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر اس پانی نے دس ہزار برس زیر زمین گزارے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ یہ اس وقت زمین سے نیچے گیا ہو گا جب ماحولیاتی آلودگی نہیں تھی اور کہا جا سکتا ہے کہ اس کا معیار اس پانی سے بہتر ہو گا جو مہینوں یا سالوں میں چکر پورا کرتا ہے۔

تاہم انہوں نے کہا کہ اس پانی کے ذخیرے کے اوپر نمکین پانی کا چھوٹا سا ذخیرہ ہے اور اگر احتیاط نہ برتی گئی اور لوگوں نے بغیر اجازت یا بتائے ہو طریقے کے خلاف پانی نکالنے کی کوشش کی تو ان دونوں ذخیروں کے درمیان راستہ بننے کا خطرہ ہے جس سے نیچے والا پانی بھی نمکین ہو جائے گا۔

اسی بارے میں