قدیم ترین چکر دار کہکشاں کی دریافت

آخری وقت اشاعت:  اتوار 22 جولائ 2012 ,‭ 13:57 GMT 18:57 PST
ہبل تصویر

کہکشاں کے مدار میں بونے یا ماند کہکشاں نے اسے چکردار شکل دی ہے۔

ماہرین فلکیات نے قدیم ترین چکر دار کہکشاں دریافت کرنے کا دعویٰ کیا ہے جو کائنات کے وجود میں آنے کے تین ارب سال بعد معرض وجود میں آئی تھی۔

کہکشاں کے بننے کے اصول کے مطابق اس وقت کائنات اس قدر بے ترتیب اور غیر منظم تھی کہ اتنی عظیم اور کامل مرغولہ دار یا چکردار کہکشاں کا بننا مشکل تھا۔

اس کے لیے کافی عرصہ درکار ہوتا ہے جس میں قوت کشش مادوں کو پتلے اور صاف ستھرے تھال یا ڈسک کی شکل میں مزین کر سکے۔

سائنسی جریدے ’نیچر‘ میں شائع ایک رپور ٹ کے مطابق ماہر فلکیات کی ایک ٹیم نے یہ معلوم کر لیا ہے کہ ’بی ایکس چار سو بیالیس‘ نامی اس کہکشاں نے قوت کشش کی خاصیت جلدی حاصل کر لی اور اس نے اپنے مدار میں موجود چھوٹی کہکشاؤں کو چکر دار شکل میں لے آئی۔

ہبل خلائی دوربین کے ذریعے تین سو کہکشاؤں کی جانچ کے بعد پتہ چلا ہے کہ بی ایکس چارسو بیالیس نامی کہکشاں واحد کہکشاں ہے جو چکردار ہے۔ یہ دریافت ماہرین فلکیات کے لیےحیران کن ہے۔

ٹورنٹو یونیورسٹی کے ڈنلپ انسٹی ٹیوٹ سےاس رپورٹ کے مصنف ڈیوڈ لا کا کہنا ہے کہ ’جب ہم نے اس کہکشاں کو دیکھا تو ہمیں معلوم ہوا کہ اس زمانے میں یہ بہت زیادہ متحرک اور گرم رہی ہوگی‘۔

انھوں نے بی بی سی کو بتایا ’ہرچند کہ ہمیں اس زمانے میں کچھ ڈسک نظر آتے ہیں جو کہ بہت موٹے اور پھولے ہوئے ہیں جبکہ ہماری کہکشاں ملکی وے میں کچھ عجیب و غریب حرکات ہیں جو کہ منظم گردش کا دسواں حصہ ہیں اور اس کے سبب ایک بہت پتلے ڈسک کے وجود میں آنے کے امکان میں اضافہ ہوتا ہے‘۔

اس کہکشاں کے باریک بینی کے ساتھ مشاہدہ کرنے کے لیے ٹیم ہوائی میں موجود مشاہداتی تجربہ گاہ گئی جہاں یہ سہولت موجود ہے کہ زمین سے اس قدر فاصلے کے درمیان آنے والے پانی کے اثرات کو کم کر دیا جاتا ہے۔

ان مشاہدات میں ہبل کے اعداد شمار کی تصدیق کی گئی کہ اس کہکشاں کے گرد ’ستاروں کے چھوٹے جھرمٹ‘ موجود ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔