بھارت: مریخ پر خلائی مشن بھیجنے کا اعلان

آخری وقت اشاعت:  بدھ 15 اگست 2012 ,‭ 18:21 GMT 23:21 PST
وزیر اعظم منموہن سنگھ

مریخ پر بھیجا جانے والا یہ چھٹا عالمی مشن ہوگا

بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ نے مریخ پر خلائی مشن بھیجنے کے منصوبے کا باقاعدہ طور پر اعلان کر دیا ہے۔ یہ مشن آئندہ برس نومبر میں روانہ کیا جائے گا اور اس پر تقریباً سو ملین ڈالر خرچ ہوں گے۔

یوم آزادی کے موقع پر قوم سے خطاب کرتے ہوئے بھارتی وزیراعظم نےکہا کہ حال ہی میں وفاقی کابینہ نے مارس آربٹر مشن کی منظوری دیدی ہے جس کے تحت ہمارے خلائی گاڑی مریخ کے قریب جائے گی اور اہم سائنسی معلومات اکھٹا کرے گی۔

ان کے مطابق یہ مشن سائنس اور ٹکنالوجی کے شعبے میں بھارت کے لیے بہت بڑی کامیابی ہوگا۔

مریخ پر بھیجا جانے والا یہ صرف چھٹا مشن ہوگا۔اس سے پہلے امریکہ، روس، یورپ، جاپان اور چین نے اپنے مشن روانہ کیے تھے۔ لیکن مشن کے کامیاب ہونے کی صورت میں بھارت کو ایشیا میں ایک منفرد مقام حاصل ہو سکتا ہے کیونکہ چین اور جاپان کے مشن ناکام رہے تھے۔

بھارت میں خلائی تحقیق کے ادارے اسرو نے پہلے ہی مشن کی تیاری شروع کردی ہے اور اس کے منصوبے کے مطابق مریخ تک جو خلائی گاڑی بھیجی جائے گی اس پر تقریباً ساڑھے چار سو کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔

اسے خلا میں بھیجنے کے لیے پولر سیٹلائٹ لانچ وہیکل پی ایس ایل وی استعمال کیا جائے گا۔ بتایا جاتا ہے کہ یہ راکٹ آندھر پردیش میں سری ہری کوٹا سے داغا جائے گا اور تقریباً تین سو دن میں اپنا سفر پورا کرے گا۔

لیکن سائنسدانوں کے مطابق اگر یہ مشن آئندہ برس نومبر میں روانہ نہیں کیا جا سکا تو پھر اگلا موقع دو ہزار سولہ اور دو ہزار اٹھارہ میں آئے گا۔

وفاقی کابینہ نے اس منصوبے کی چار اگست کو منظوری دیدی تھی لیکن اس کا باقاعدہ اعلان نہیں کیا گیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔