اچھی یادداشت کے لیے بڑھاپے میں ورزش لازم

آخری وقت اشاعت:  اتوار 28 اکتوبر 2012 ,‭ 06:19 GMT 11:19 PST

ورزش سے جسم میں خون کا بہاؤ برقرار رہتا ہے جو دماغ کو آکسیجن اور دوسرے غذائی جزو دیتا ہے

اگر آپ چاہتے ہیں کہ ستّر برس کی عمر میں بھی آپ کا دماغ صحیح کام کر سکے اور آپ ’ڈمینشيا‘ یعنی بھولنے کی بیماری کا شکار نہ ہو تو اس کے لیے ورزش کرنا ضروری ہے۔

برطانیہ میں ریٹائر ہونے والے چھ سو اڑسٹھ افراد پر تین سال تک کی گئی ایک تحقیق کے نتائج کے مطابق وہ لوگ جو جسمانی طور پر سرگرم ہیں، ان کے دماغ میں کسی طرح کی کمزوری نہیں ہوتی اور نہ ہی عمر اپنا اثر دکھاتی ہے۔

وہیں یہ بات بھی سامنے آئی کہ دماغی ورزش کرنا، شطرنج کھیلنا، سماجی سرگرمیوں میں شامل رہنا یا اپنے دوستوں اور اہل خانہ کے ساتھ وقت گزارنا، دماغ کی حالت میں بہتری کے لیے خاص معنی نہیں رکھتا۔

محققین نے جب ستّر سالہ افراد کے دماغ کے سفید حصے (دماغ کا وہ حصہ جو کھوپڑی میں کسی پیغام کو پہنچانے کا کام کرتا ہے) کا مطالعہ کیا تو پتہ چلا کہ جو لوگ مسلسل جسمانی طور پر سرگرم تھے، ان کے دماغ کو ان افراد کی نسبت کم نقصان پہنچا جو کم سرگرم تھے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ بڑھتی عمر کے ساتھ دماغ کی حالت کمزور ہوتی چلی جاتی ہے، جن میں بھولنے کی عادت سے لے کر سوچنے کی صلاحیت تک شامل ہے لیکن جسمانی ورزش کی مدد سے ان علامات کو کم کیا جا سکتا ہے۔

دراصل، ورزش سے ہمارے جسم میں خون کا بہاؤ برقرار رہتا ہے جو دماغ کو آکسیجن اور دوسرے غذائی جزو دیتا ہے۔

اس تحقیق کے مرکزی محقق برطانیہ کے سائمن ریڈلے کا کہنا ہے، ’یہ مطالعہ بتاتا ہے کہ جسمانی ورزش کرنے والوں کے دماغ پر بڑھتی عمر کا اثر کم ہوتا ہے‘۔ ان کا کہنا ہے کہ’اگر ادھیڑ عمر سے ہی ورزش شروع کر دیی جائے تو بھولنے جیسی خوفناک بیماری سے بچا جا سکتا ہے‘۔

ان کے مطابق آنے والے جن لوگوں پر یہ تحقیق کی گئی ہے آنے والے کچھ سالوں تک ان لوگوں کے طریقۂ کار کا مطالعہ کرنا ہوگا تاکہ جسمانی سرگرمیوں سے دماغ پر پڑنے والے اثرات پر مزید معلومات حاصل ہو سکیں اور ساتھ ہی جسمانی ورزش کے دماغ پر ہونے والے اثرات اور فوائد کو جانچا جا سکے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔