بے روزگاری، دل کی بیماریوں کا امکان زیادہ

آخری وقت اشاعت:  منگل 20 نومبر 2012 ,‭ 12:53 GMT 17:53 PST

ایک حالیہ تحقیق کے مطابق پچاس اور ساٹھ سال کی عمر کے بے روزگار افراد میں ہاٹ اٹیک یعنی دل کے دورے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔

تحقیق کے مطابق ہاٹ اٹیک کے حوالے سے بے روزگاری اور سگریٹ نوشی کے عوامل ایک جیسے ہی ہیں۔

امریکہ میں ایسے تیرہ ہزار افراد پر تحقیق کی گئی جنہیں بے روزگار ہوئے ایک سال ہوا تھا۔

نتائج کے مطابق ایسے افراد میں بے روزگاری کے پہلے تین ماہ میں دل کے دورے کا امکان زیادہ ہو جاتا ہے اور نوکری سے نکالے جانے کی صورت میں سے امکان میں تیزی سے اضافہ ہوتا ہے۔

آرکائیو آف انٹرنل میڈیسن کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ رضا کارانہ طور پر نوکری چھوڑنے والے افراد میں بھی ایسی علامات پائی گئیں ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ سٹریس یا ذہنی دباؤ کی وجہ سے ایسا ممکن ہو سکتا ہے تاہم اس ضمن میں مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔

اس سے پہلے کی گئی ایک تحقیق کے مطابق ایسی نوکری جس میں ذہنی دباؤ کا سامنا ہو تو اس میں بھی دل کے دورے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔

برٹش ہاٹ فاؤنڈیشن نے تجویز کیا ہے کہ اگرچہ ذہنی دباؤ کا دل کے عارضے سے تعلق ہو سکتا ہے لیکن یہ براہ راست دل کی بیماریوں کا باعث نہیں بنتا ہے۔

بیس سال پر محیط اس تحقیق میں حصہ لینے والے تیرہ ہزار چار سو اکاون افراد میں سے ایک ہزار کو دل کا دورہ پڑا۔

محققین کے مطابق تحقیق میں شامل ایسے خواتین اور مرد کو دل کی بیماریوں کا زیادہ خطرہ رہا جو تمباکو نوشی کرتے تھے اور بہت کم یا بلکہ ورزش نہیں کرتے تھے۔

اس میں ایسے افراد بھی تھے جو عمر دراز تھے اور ان کو بلڈ پریشر اور شوگر تھی۔

حال ہی میں بے روزگار ہونے والے افراد میں سے ستائیس فیصد میں دل کی بیماری کی علامات مشترکہ تھیں۔ اس میں نوکری کی نوعیت کے بغیر ایسے افراد کو دل کی بیماری کا تریسٹھ فیصد زیادہ خطرہ ہوتا ہے جن کی چار بار نوکری جا چکی ہو۔

نارتھ کیرولینا کی ڈیوک یونیورسٹی کی محقق ڈاکٹر لنڈا جارج کے مطابق اس کا قابل ذکر حد تک اثر ہوتا ہے اور یہ بلکہ ایسے ہی جیسا کہ دل کے بیماریوں کے حوالے سے موٹاپا اور ذیابیطس جیسے دیگر عوامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ’ہمارے خیال میں بے روزگاری سے نمٹنے کی دوران ذہنی دباؤ کی وجہ سے ایسا ہو سکتا ہے، اور یہ بھی ممکن ہے کہ نوکری کے دوران دباؤ کے برعکس نوکری کے چھوٹ جانے کے زیادہ اثرات ہوں۔‘

امریکن ہاٹ ایسوسی ایشن کے ڈاکٹر ڈونا ارنیٹ کا کہنا ہے کہ’ اس سے معلوم ہوتا ہے کہ زندگی میں ذہنی دباؤ کے عوامل دل کے دورے کے امکانات کو بڑھا دیتے ہیں۔ کام سے نکلنے کی صورت میں کافی دباؤ کا سامنا کرنا پڑتا ہے لیکن ابھی تک ہمیں نہیں معلوم کہ دباؤ دل کے عارضے میں کیا کردار ادا کرتا ہے، اور اس میں زیادہ تحقیق کی ضرورت ہے۔‘

انٹرنیشنل سٹریس میمنجمنٹ ایسوسی ایشن کے این میکریکن کا کہنا ہے کہ آپ اس حقیقت کو تبدیل نہیں کر سکتے کہ آپ بے روزگار ہیں، لیکن آپ اس کے بارے میں سوچنے کے انداز کو تبدیل کر سکتے ہیں، اور اس کا کم یا طویل عرصے کے لیے آپ کی صحت پر اثر ہو سکتا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔