’کوئلے کا استعمال تیل سے زیادہ ہو جائے گا‘

آخری وقت اشاعت:  بدھ 19 دسمبر 2012 ,‭ 01:36 GMT 06:36 PST

بین الاقوامی توانائی کی ایجنسی کا کہنا ہے کہ سنہ 2022 تک عالمی سطح پر توانائی کا ذریعہ تیل سے زیادہ کوئلہ بن جائے گا۔

ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق بھارت اور چین میں توانائی کے لیے کوئلے کا استعمال زیادہ ہو گیا ہے۔

ایجنسی کی جانب سے جاری کی گئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 2017 تک کوئلے کا استعمال 4.32 بلین ٹن ہو جائے گا جبکہ تیل کا استعمال 4.4 بلین ٹن ہو گا۔

ایجنسی کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر کا کہنا ہے ’عالمی سطح پر توانائی کے لیے کوئلے کا استعمال بڑھ رہا ہے۔ اگر اس صورتحال میں تبدیلی نہ لائی گئی تو ایک دہائی میں کوئلے کا استعمال تیل کے برابر ہو جائے گا۔‘

رپورٹ میں پیسینگوئی کی گئی ہے کہ 2014 تک چین دنیا بھر میں استعمال ہونے والے کوئلے کی آدھی مقدار استعمال کرے گا۔ اس رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ بھارت 2014 میں امریکہ کو کوئلے کے استعمال میں پیچھے چھوڑ کر دنیا کا دوسرا بڑا ملک بن جائے گا جو توانائی کے لیے کوئلے پر انحصار کرتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق قدرتی گیس کاربن کے اخراج میں کمی کا بہترین ذریعہ ہے۔

ایجنسی کی جانب سے اس سے قبل ایک رپورٹ میں کہگ گیا تھا کہ اگر توانائی کے لیے کوئلے کے استعمال کو کم نہ کیا گیا تو اوسط عالمی درجہ حرارت میں چھ فیصد اضافہ ہو گا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔