ایرون سوارٹز، ایم آئی ٹی کی تحقیقات

آخری وقت اشاعت:  پير 14 جنوری 2013 ,‭ 15:33 GMT 20:33 PST

ایرن سوارٹز کو ہیکنگ کے الزامات کا سامنا تھا

امریکہ کے میساچیوسٹس انسٹیٹیوٹ آف ٹیکلنالوجی کے صدر نے کہا ہے کہ ایرون سوارٹز کی موت میں ادارے کے کردار کے بارے میں اندرونی تحقیقات کی جائیں گی۔

انٹرنیٹ کی آزادی کے لیے سرگرم کارکن اور ریڈٹ نامی ویب سائٹ کو ڈیولیپ کرنے والے ایرون سوارٹز نے جمعہ کو خودکشی کی تھی۔ انہیں امریکہ میں ہیکنگ کے الزامات کا سامنا تھا۔

ایرون سوارٹز پر الزام تھا کہ انہوں نے میساچیوسٹس انسٹیٹیوٹ آف ٹیکلنالوجی (ایم آئی ٹی) کی نیٹ ورک استعمال کرتے ہوئے تعلیمی خدمات دینی والی ویب سائٹ جے سٹور سے غیر قانونی طور پر تحقیقاتی مقالے ڈاؤن لوڈ کیے تھے۔

ایرون سوارٹز کے خاندان نے ایک بیان میں کہا کہ ان کی موت میں ایم آئی ٹی اور میساچیوسٹس کے اٹارنی جنرل کے دفتر کی طرف سے کیے گئے اقدامات کا بھی کردار ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’ایرون سوارٹز کی موت صرف ایک ذاتی سانحۂ نہیں بلکہ یہ ایک خراب فوجی داری نظام انصاف کا نتیجہ ہے‘۔

ایم آئی ٹی کے صدر ایل رافیل ریف نے پیر کو اریرون کی تخلیقی صلاحیتوں کی تعریف کرتے ہوا کہا کہ’مجھے یہ سوچ کر بڑی تکلیف ہوتی ہے ایم آئی ٹی نے ایسے واقعات میں حصہ لیا جن کا اختتام المناک تھا‘۔

"مجھے یہ سوچھ کر بڑی تکلیف ہوتی ہے ایم آئی ٹی نے ایسے واقعات میں حصہ لیا جن کا اختتام المناک تھا۔اب وقت آ گیا ہے کہ آیم آئی ٹی میں اہم سب اپنے کیے گئےاقدامات پر غور کریں۔"

ایم آئی ٹی کے صدر ایل رافیل ریف

انہوں نے کہا کہ ’اب وقت آ گیا ہے کہ آیم آئی ٹی میں ہم سب اپنے کیے گئےاقدامات پر غور کریں‘۔

انہوں نے بتایا کہ انہوں نے اپنے ساتھی پروفیسر حال آبیلسن سے کہا کہ 2010 میں ایم آئی ٹی کو پہلی بار اپنے نیٹ ورک پر ’غیر معمولی‘ سرگرمیاں نظر آئیں تو اس وقت ایم آئی ٹی نے کیا فیصلے کیے اور اس کے پاس فیصلے کرنے کے کون کون سے راستے تھے۔

ایم آئی ٹی کے صدر ایل رافیل ریف نے کہا کہ’میں واضح طور پر کہنا چاہتا ہوں ہم سب اس ذہین نوجوان کی موت پر افسردہ ہیں‘۔

سوارٹز نے گذشتہ سال ہونے والی شروعاتی شنوائی میں ان پر لگائے گئے الزامات کو مسترد کر دیا تھا لیکن ان کے خلاف وفاقی سطح کے مقدمے کی شنوائی آئندہ ماہ شروع ہونے والی تھی۔

اگر ان کو اس جرم کا مرتکب پایا جاتا تو انہیں ایک ملین امریکی ڈالر جرمانے کے ساتھ 35 سال کی سزا ہو سکتی تھی۔

نیویارک کی میڈیکل جانچ کے ایک ترجمان نے خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایا تھا کہ مسٹر سوارٹز نے پھانسی لگا کر خود کشی کر لی تھی۔

ان کی نعش جمعہ کو ان کے اپارٹمنٹ سے برآمد کی گئی تھی۔

ایرون سوارٹز نے بچپن سے ہی کمپیوٹر پروگرامنگ کرنا شروع کر دیا تھا اور انھوں نے چودہ سال کی عمر میں کچھ لوگوں کے ساتھ مل کر آر ایس ایس یعنی رچ سائٹ سمری کے شروعاتی پروگرام لکھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔