بھارت کے مریخ مشن میں ایک ہفتے کی تاخیر

بھارت کے مریخ کے لیے خلائی مشن ’مارس آربٹر مشن‘ یعنی ’منگليان‘ کی لانچ کی تاریخ کو ایک ہفتے کے لیے آگے بڑھا دیا گیا ہے۔

منصوبے کے آغاز میں تاخیر کی وجہ بحرالکاہل پر موسم کی خرابی بتائی گئی ہے۔

بھارتی خلائی تحقیق تنظیم (آئی ایس آر او) کے ترجمان ڈی پی كارك نے بی بی سی کو بتایا ’مارس آربٹر مشن کو ایک ہفتے کے لئے ٹال دیا گیا ہے۔ ایسا اس لیے ہوا کیونکہ دوسرے جہاز کے بحرالکاہل میں پہنچنے میں تاخیر ہوئی ہے‘۔

بھارت کے مریخ مہم پر بحر الکاہل سے نظر رکھنا چاہتا ہے۔

اس کے لیے دو جہاز بحر الکاہل میں موجود رہیں گے جو راکٹ کے لانچ ہونے کے کچھ منٹ بعد تک اس پر نظر رکھیں گے جب یہ بحر الکاہل کے اوپر سے پرواز بھرے گا۔

لیکن خراب موسم کی وجہ سے ایک جہاز کے پہنچنے میں تاخیر ہوئی ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ دوسرا جہاز بائیس اکتوبر تک بحرالکاہل میں پہنچے گا۔

ڈی پی كارك نے کہا، ’سب کچھ تیار ہے، سپیسكرافٹ تیار ہے، سیٹلائٹ تیار ہے، ایسا بنیادی طور پر خراب موسم کی وجہ سے کیا گیا ہے‘۔

بھارتی خلائی تحقیق تنظیم کا ’منگليان‘ کو اکتوبر کے آخر تک مریخ کے لیے روانہ کرنے کا ارادہ تھا۔

اگر یہ خلائی مشن زیادہ سے زیادہ انیس نومبر تک شروع نہیں ہوسکا تو اسے تقریباً دو سال کے لئے ٹالنا پڑ سکتا ہے۔

اسی بارے میں