سنہری مچھلی کے دماغ کا خطرناک آپریشن

تصویر کے کاپی رائٹ Lort Smith Animal Hospital
Image caption جارج نامی اس مچھلی کے آپریشن پر 200 امریکی ڈالر کے اخراجات آئے

آسٹریلیا میں ایک گولڈ فش (سنہری مچھلی) سر میں نکل آنے والی ایک مہلک رسولی کے انتہائی خطرناک آپریشن کے بعد رو بہ صحت ہے۔

جارج نامی اس مچھلی کے آپریشن پر 200 امریکی ڈالر کے اخراجات آئے ہیں۔ اس دوران اسے مکمل بے ہوش کرنے والی دوا دی گئی تھی۔

اس گولڈ فش کی مالکن آسٹریلیا کے شہر میلبرن میں رہتی ہیں۔

گولڈ فش کا آپریشن کرنے والے ڈاکٹر ٹرسٹان رچ نے میلبورن ریڈیو 3اے ڈبلیو کو بتایا کہ ’اب مچھلی ہوش میں ہے اور ادھر ادھر تیر رہی ہے۔‘

جانوروں کا علاج کرنے والے اس ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ یہ دس سالہ گولڈ فش اب مزید 20 سال زندہ رہ سکتی ہے۔

لورٹ سمتھ اینیمل ہسپتال کے ڈاکٹر رچ نے کہا: ’جارج کے سر پر بہت بڑی رسولی نکل آئی تھی اور رفتہ رفتہ بڑھ رہی تھی جس سے اس کی زندگی متاثر ہو رہی تھی۔‘

جارج کی مالکن کو دو متبادل دیے گئے تھے کہ آیا وہ اس کا آپریشن کرائیں یا اسے ختم کر دیں۔

ڈاکٹر نے بتایا کہ ’مالکن اس سے اس قدر مانوس تھیں کہ انھوں نے آپریشن کا فیصلہ کیا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ڈاکٹر لورٹ سمتھ نے بتایا کہ یہ آپریشن 45 منٹ تک جاری رہا اور اب مچھلی رو بہ صحت ہے

انھوں نے بتایا کہ آپریشن کے دوران مچھلی کو آکسیجن والے تالاب کا پانی اس کے گلز کے ذریعے پہنچایا جاتا رہا تاکہ وہ زندہ رہ سکے۔

ڈاکٹر نے 45 منٹ تک جاری رہنے والے اس آپریشن کو ’پیچیدہ اور مشکل‘ قرار دیا۔

انھوں نے بتایا کہ مچھلی کا آپریشن اس کے تیرتے رہنے کی حالت میں ہی کیا گیا اور یہ کہ جارج کو ہسپتال سے جلد ہی چھٹی مل جائے گی۔

اسی بارے میں