رونالڈینو کو ’بندر‘ کہنے پر ٹوئٹر پر ہنگامہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کیوریٹارو ایف سی نے حکام پر زور دیا ہے کہ وہ ٹروینو کے خلاف کارروائی کرے

ٹوئٹر کے صارفین نے میکسیکو کے سیاستدان کو برازیل کے فٹبال کھلاڑی رونالڈینو کو فیس بک پر ’بندر‘ کہنے پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

دسیوں ہزاروں ٹوئٹر صارفین نے میکسیکو کے سیاستدان کے تبصرے کا جواب ایک ہیش ٹیگ استعمال کرتے ہوئے دیا جس کا ترجمہ ’ہم سب بندر ہیں‘ بنتا ہے۔

میکسیکو فٹبال کلب کیوریٹارو کے مداح یہ جان کر بہت خوش ہوئے تھے کہ کلب نے رونالڈینو کو اپنی ٹیم میں شامل کیا ہے اور بہت سے لوگ انھیں پہلی دفعہ دیکھنے کے لیے جمعے کو مرکزی میکسیکو میں قائم سٹیڈیم میں جمع ہوئے۔

لیکن رونالڈینو کی آمد سے ایک شہری خوش نہیں تھا۔ کارلوس ٹروینو نامی ایک مقامی سیاستدان سٹار فٹبالر کی آمد کے موقع پر ٹریفک جام میں پھنس گیا اور اس نے فیس بک پر اپنے غصے کا اظہار کیا۔

’میں کوشش کرتا ہوں کہ برداشت کروں لیکن میں فٹبال اور اس کی طرف کم فہم افراد کا متوجہ ہونے سے نفرت کرتا ہوں۔ میں اس سے مزید نفرت کرتا ہوں جب لوگ اس کی وجہ سے گلیوں کو بند کرتے ہیں جس سے مجھے گھر پہنچنے میں دو گھنٹے لگتے ہیں۔‘

اس پوسٹ نے اس وقت ایک غیر معمولی صورتِحال اختیار کی جب ٹروینو نے نسلی تعصب کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’اور یہ سب کچھ ایک بندر کو دیکھنے کے لیے ہو رہا ہے۔ ایک برازیلی شہری لیکن بندر اور کچھ بھی نہیں۔‘

اس پوسٹ کو جلدی ہٹا دیا گیا لیکن اس وقت تک یہ سوشل میڈیا کے صارفین کی توجہ کا مرکز بن چکی تھی جنھوں نے اس تبصرے پر شدید غصے کا اظہار کیا۔

میکسیکو کے ایک شہری نے ٹوئٹر پر کہا کہ ’کیا بے وقوف آدمی، کیا انھوں نے ڈارون کو نہیں سنا؟‘ انھوں نے اپنے پیغام کے ساتھ ہیش ٹیگ TodsSomosSimios# بھی شامل کیا جس کا مطلب ہے ’ہم سب بندر ہیں۔‘

رونالڈینو کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے جاری کردہ اس محاورے نے ٹوئٹر پر دھوم مچھا دی اور پیر تک ٹروینو کو ٹوئٹر پر معافی مانگنی پڑی۔

انھوں نے لکھا کہ’میں اپنے افسوسناک تبصرے پر کیوریٹارو کلب سے معافی مانگتا ہوں۔‘ لیکن یہ اس ہیش ٹیگ کے استعمال کو روکنے کے لیے ناکافی تھا اور اسے 50 ہزار دفعہ استعمال کیا گیا جس میں آدھی سے زیادہ دفعہ صرف گذشتہ دو دنوں کے دوران ہوا۔

اس ہیش ٹیگ کا استعمال کرتے ہوئے ایک اور صارف نے لکھا:’ٹروینو ایسا بے وقوف ہے کہ میں ایک بے وقوف اور نسل پرست ہونے سے بندر ہونا زیادہ پسند کروں گا۔‘

ٹروینو کا ٹوئٹر پر اکاؤنٹ اب آن لائن نظر نہیں آ رہا۔

کیوریٹارو ایف سی نے حکام پر زور دیا ہے کہ وہ ٹروینو کے خلاف کارروائی کرے جبکہ دائیں بازو کی جماعت نیشنل ایکشن پارٹی نے جس سے ٹروینو کا تعلق ہے کہا ہے کہ وہ اس معاملے کی تحقیقات کرے گی۔

اسی بارے میں