ملکۂ برطانیہ کی پہلی ٹویٹ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption لندن سائنس میوزیم میں انفارمیشن ایج کا افتتاح تو ہوا ہی اس کے ساتھ ہی انھوں نے پہلا ٹوئیٹ بھی کیا

ملکۂ برطانیہ الزبتھ نے ایک ٹویٹ کے ساتھ لندن سائنس میوزیم کے اب تک کی سب سے بڑی نمائش کا افتتاح کیا۔

انھوں نے اپنے ٹویٹ میں لکھا کہ ’اس عہدِ معلومات کی نمائش کا سائنس میوزیم میں افتتاح کرتے ہوئے مجھے خوشی ہو رہی ہے اور مجھے امید ہے کہ لوگ یہاں آکر اس کا لطف اٹھائيں گے- الزبتھ آر‘

انھوں نے اپنا یہ پہلا ٹوئیٹ شاہ برطانیہ کے اکاؤنٹ BritishMonarchy@ سے بھیجا جس کے ساتھ ہی لند کے سائنس میوزیم کی بڑی نمائش کا افتتاح ہوا۔

تین سال کی منصوبہ بندی کے بعد میوزیم نے اب تک کی سب سے حوصلہ مندانہ نمائش لگائی ہے۔

تاریخی پراجکٹ کے علاوہ یہاں آنے والے دوطرفہ معلومات کے تبادلے اور ایک دوسرے کے تجربات سے بھی لطف اندوز ہو سکیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption ملکۂ برطانیہ کی پہلی ٹویٹ

’انفارمیشن ایج گیلری‘ کا افتتاح ملکہ نے جمعے کی صبح کیا اس میں زائرین کو جدید مواصلات کی تاريخ ٹیلی گراف سے سمارٹ فون تک کے سفر پر لے جاتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption میوزیم میں ایک لڑکی رگبی کے ٹیوننگ کوائل کو تجسس کے ساتھ دیکھ رہی ہے

یہاں بحر اوقیانوس یعنی اٹلانٹک کے پار پیغام لے جانے والا پہلا ٹیلی گراف موجود ہے جس نے پہلی بار یورپ کو شمالی امریکہ سے جوڑ دیا تھا، سنہ 1922 میں بی بی سی کے پہلے ریڈیو پروگرام کو نشر کرنے میں شامل آلات کے علاوہ سر ٹم برنرز لی کا کمپیوٹر نکسٹ ( NeXT) ہے جس نے پہلی ویب سائٹ ہوسٹ کی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption بی بی سی کا پہلا ٹرانس میٹر

گیلری کے سربراہ کیوریٹر ٹیلی بلیتھ نے امید ظاہر کی ہے کہ جن زائرین کو ڈیجیٹل انقلاب کے بارے میں بنیادی معلومات ہوگی وہ یہاں زیادہ دیر رکیں گے۔

انھوں نے کہا ’ہم چاہتے ہیں کہ وہ یہ دیکھیں کہ ہمارے سابقین بھی اس تبدیلی کے دور سے گزر رہے تھے۔‘

اسی بارے میں