نوکیا کا ’ہیئر‘ ایپ کے نام پر ایک کمپنی سے تنازع

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption نوکیا نے اپنی نئی ایپ ہیئر پر ایک کروڑ ڈالر سے زیادہ خرچہ ہے

ٹیکنالوجی کمپنی نوکیا نے ایک لفظ ’ہیئر‘ کےاستعمال پر ایک چھوٹی برطانوی ٹیکنالوجی کمپنی کے خلا ف قانونی چارہ جوئی کرنے کی دھمکی دی ہے۔

’لو ڈاؤن ایپ‘ ایک ڈیجیٹل ذاتی اسسٹنٹ ہے جو صارفین ’ہیئر‘ کا بٹن دبا کر اپنے دوستوں کو اطلاع دینے کی اجازت دیتا ہے کہ وہ ایک جگہ پر پہنچ چکے ہیں۔

نوکیا نے بھی ایک ایپ جاری کی ہے جس کا نام ’ہیئر‘ ہے اور یہ بھی لوکیشن میں چیک ان کرنے کے لیے بنائی گئی ہے۔

نوکیا کا کہنا ہے کہ لوگ سمجھیں گے کہ اس لوڈاؤن ایپ کی ’ہیئر‘ بھی نوکیا کی ایپ کا حصہ ہے۔

نوکیا کی ’ہیئر‘ ایپ میپنگ اور نیویگیشن سروسز کے لیے بنائی گئی ہے۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ اس نے اپنی نئی برینڈ ’ہیئر‘ کے اشتہارات میں ایک کروڑ بیس لاکھ ڈالر خرچے ہیں۔

نوکیا نے ایک خط میں لندن میں قائم لو ڈاؤن ایپ کو اپنی برینڈ کا نام تبدیل کرنے کے لیے 10 فروری تک مہلت دی ہے۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ اس نے اپنے نام کے ٹریڈ مارک کو کمپیوٹر سافٹ ویئر سے متعلق ایپس کے لیے رجسٹر کر وا لیا ہے۔

لوڈاؤن کے چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ سینئرنے اس دھمکی کو چیونٹی اور ہاتھی کے مقابلے سے تشبیہ دیتے ہوئے کہا کہ: ’ہماری ایک چھوٹی سٹارٹ اپ کمپنی ہیں اور ہمیں نہیں لگتا کہ اربوں کمانے والی اس کمپنی کو ہمارے ہونے سے اتنا فرق پڑنا چاہیے۔ ان کو ایپل اور گوگل جیسی بڑی کمپنیوں کی میپنگ سروسز کے ساتھ مقابلہ کرنا چاہیے، ہمارے سے نہیں۔‘

ڈیوڈ نے مزید کہا کہ وہ ہیئر کی ایپ کو دکانوں سے ہٹا رہے ہیں لیکن ’ہیئر‘ بٹن کو لوڈاؤن ایپ سے ہٹانے سے پہلے وہ قانونی مشورہ کریں گے۔

نوکیا سے اس بارے میں رابطہ نہیں ہو سکا ہے۔

اسی بارے میں