’بیل کی جسامت کا چوہا دریافت‘

تصویر کے کاپی رائٹ JAMES GURNEY
Image caption جنوبی امریکہ میں ملنے والی اس جانور کی کھوپڑی 1,000 کلو گرام وزنی ہے جسے جوزے فورٹیگاسیا مونیسی کا نام دیا گیا ہے

سائنس دانوں نے ایک ایسے چوہے کا ڈھانچا دریافت کیا ہے جسے سب سے بڑا چوہا قرار دیا جا رہا ہے اور یہ جانور سامنے والے بڑے دانتوں کے ذریعے اپنا دفاع کرتا تھا۔

ان کا کہنا ہے کہ بیل کی جسامت کا یہ چوہا تقریباً 20 لاکھ سال پہلے معدوم ہو گیا تھا۔

سی ٹی سکین کے مطابق اس جانور کی کاٹ چیتے کی طرح مضبوط ہے اور اس کے سامنے والے دانت تقریباً تین گنا بڑے دشمن کا مقابلہ کر سکتے تھے۔

سائنس دانوں کے مطابق تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ اس جانور کے سامنے والے 30 سینٹی میٹر لمبے دانت صرف کھانا کھانے ہی کے کام ہیں آتے تھے۔

یارک اور برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ان سائنس دانوں کی تحقیق جریدے اناٹومی میں چھپی ہے۔

جنوبی امریکہ میں ملنے والی اس جانور کی کھوپڑی 1,000 کلو گرام وزنی ہے جسے جوزے فورٹیگاسیا مونیسی کا نام دیا گیا ہے۔

سنہ 2007 میں یوراگوئے سے ملنے والا یہ جانور پلائیو سین دور میں رہتا تھا۔

سائنس دانوں کے مطابق یہ اب تک چوہوں کی نسل کا یہ سب سے بڑا جانور ہے۔

سائنس دانوں نے اس جانور کی کھوپڑی کا سی ٹی سکین کے ذریعے تجزیہ کیا۔

اسی بارے میں