’زیادہ دوڑنا صحت کے لیے اتنا نقصان دہ جتنا ورزش نہ کرنا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption زیادہ بھاگنا بھی صحت کے لیے اچھا نہیں ہے: تحقیق

امریکی کالج آف کارڈیالوجی کے ایک جرنل کے مطابق بہت زیادہ جوش سے جاگنگ کرنا یا بھاگنا اپنے جوتے نہیں پہنے کے برابر ہے۔

سائنسدانوں نے 12 سالوں میں 1000 صحت مند جاگرز اور جاگنگ نہ کرنے والے لوگوں کا جائزہ لیا۔

ان کی تحقیق کا نتیجہ ہے کہ ایک ہفتے میں ڈھائی گھنٹوں سے کم بھاگنا صحت کے لیے سب سے بہتر ہے۔

برطانیہ میں بالغ لوگوں کو ہر ہفتے 150 منٹوں کی ورزش کرنے کی تجویز کی جاتی ہے۔

اس ڈینش تحقیق نے شرکا سے درخواست کی کہ وہ ہر بار نوٹ کریں کہ انھوں نے کتنی دیر کے لیے جاگنگ کی اور کب۔ اور ان کی صحت کے بارے میں کچھ سوال بھی پوچے۔

سائنس دان اس نتیجے پر پہنچے کہ ہر گھنٹے میں پانچ میل بھاگنا ہی جاگنگ کے لیے بہترین رفتار ہے اور ایک ہفتے میں تین دفہ سے زیادہ نہیں بھاگنا چاہیے۔

کوپن ہیگن کے فریڈریکسبرگ ہسپتال کے محقق جیکب لوئس مارو کا کہنا ہے کہ: ’آپ کو اپنی صحت بہتر کرنے کے لیے اتنا کچھ نہیں کرنا پڑھتا۔ اور شاید آپ کو زیادہ کرنا بھی نہیں چاہیے۔‘

بارہ سال پر محیط اس تحقیق میں چھتیس لوگوں کو سخت جاگنگ کرنے والے درجہ میں ڈالا گیا جن میں سے دو لوگ انتقال بھی کر گئے۔

اس تحقیق نے حال ہی میں ہونے والی تحقیق کا بھی جائزہ لیا جس میں چوہوں کو زیادہ ورزش کروانے سے پتہ چلا کہ اس سے دل کو نقصان پہنچتا ہے۔

برطانوی ہارٹ فاؤنڈیشن کی ایک سینئر کارڈیک نرس مورین ٹالبوٹ کا کہنا تھا کہ: ’یہ تحقیق یہ ظاہر کرتی ہے کہ ہلکی پھلکی جاگنگ کرنا صحت کے لیے زیادہ اچھا ہوتا ہے اور آپ کی زندگی بھی زیادہ لمبی کرتا ہے۔‘

اسی بارے میں