جب سٹیو جابز نے جگر کے عطیے کی پیشکش ٹھکرا دی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ان اقتباسات میں اپیل کے موجودہ چیف اگزیکٹیو ٹم کُک اور سابق بانی سٹیو جابز کے باہمی تعلقات کا بھی تذکرہ ہے

ایپل کمپنی کے موجودہ چیف ایگزیکٹیو ٹِم کُک نے کمپنی کے بانی سٹیو جابز کو اپنے جگر کا ایک حصہ دینے کی پیشکش کی تھی تاکہ اپیل کے بیمار بانی صحت یاب ہو سکیں۔

یہ انکشاف ایک کتاب میں کیا گیا ہے جس کا اجرا ماہِ رواں کے آخر میں ہو رہا ہے۔

کتاب ’Becoming Steve Jobs‘ کے کچھ اقتباسات آن لائن شائع ہوئے ہیں جن سے اس بات پر روشنی پڑتی ہے کہ ایپل کمپنی کس طرح کام کرتی تھی اور کس طرح یہ دنیا میں ٹیکنالوجی کی سب سے طاقتور کمپنی بن گئی۔

ان اقتباسات میں اپیل کے موجودہ چیف ایگزیکٹیو ٹم کُک اور سابق بانی سٹیو جابز کے باہمی تعلقات کا بھی تذکرہ ہے۔

کتاب کے مطابق جس وقت ٹم کُک نے سٹیو جابز کو جب وہ جگر کے عارضے میں مبتلا تھے، اپنے جگر کا کچھ حصہ دینے کی پیشکش کی تو سٹیو جابز غصے میں آگئے اور انھوں نے یہ پیشکش ٹھکرا دی۔

2004 میں سٹیو جابز نے اعلان کیا تھا کہ وہ لبلبے کے کینسر میں مبتلا ہیں۔

2009 تک سٹیو جابز بہت زیادہ بیمار ہو چکے تھے۔ وہ دفتر آنے جانے کے قابل بھی نہیں رہے تھے اور جگر کی تبدیلی کا انتظار کر رہے تھے۔

ٹِم کُک باقاعدگی سے سٹیو جابز کی تیمارداری کے لیے ان کے گھر جایا کرتے تھے۔

فاسٹ کمپنی کے ایگزیکٹو ایڈیٹر رِک ٹیٹزیلی نے جو کتاب کے شریک مصنف بھی ہیں، لکھا ہے کہ ’ایک روز ٹِم کُک کی طبیعت اتنی خراب ہوگئی کہ انھوں نے اپنے خون کے بھی ٹیسٹ کرائے۔‘

اس کتاب کے دوسرے مصنف صحافی شیلنڈر ہیں جنھوں نے کئی مرتبہ سٹیو جابز کا انٹرویو کیا ہے۔

خون کے ٹیسٹ کرانے کے بعد ٹِم کُک کو پتہ چلا کہ خود ان کے خون کی قسم بھی ویسی ہی نایاب ہے جیسی سٹیو جابز کی اور انھیں لگا کہ شاید انھیں بھی وہی مرض ہو جیسا سٹیو جابز کو تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مارچ 2009 میں سٹیو جابز کے جگر کا ٹرانسپلانٹ ہوا

کتاب کے اقتباسات کے مطابق ٹِم نے کئی دیگر ٹیسٹ بھی کرائے اور انھیں پتہ چلا کہ وہ سٹیو کو اپنے جگر کا کچھ حصہ ٹرانسپلانٹ کے لیے دے سکتے ہیں۔

لیکن جب انھوں نے بسترِ مرگ پر پڑے سٹیو جابز کو اپنے جگر کا کچھ حصہ دینے کی پیشکش کی تو سٹیو غصے میں آگئے اور انھوں نے یہ پیشکش مسترد کر دی۔

ٹِم کے بقول: ’سٹیو جابز نے میری بات بھی پوری نہیں ہونے دی اور کہا کہ میں تمھیں ہرگز ایسا نہیں کرنے دوں گا۔ میں ایسا کبھی نہیں کروں گا۔‘

مارچ 2009 میں سٹیو جابز کے جگر کا ٹرانسپلانٹ ہوا۔ انھوں نے اگست 2011 میں اپیل کمپنی کے چیف ایگزیکٹیو کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا اور اس برس اکتوبر کے مہینے میں وہ 56 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔

کتاب کے مطابق سٹیو جابز نے ایک وقت پر ایپل کمپنی کو تلاش یا سرچ بزنس کے قابل بنانے کے لیے یاہو سرچ انجن خریدنے پر بھی غور کیا تھا۔

تاہم والٹر آئزکسن کی تحریر کردہ سٹیو جابز کی ایک اور سوانح عمری کے مطابق ایپل کے بانی دراصل ٹی وی چینل شروع کرنے کے بارے میں سوچ رہے تھے۔

اسی بارے میں