جاپانی ٹرین کا 600 کلومیٹر فی گھنٹہ کی ریکارڈ رفتار سے سفر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یہ ٹرین برقی چارج شدہ مقناطیسوں کی قوت کی مدد سے پٹڑی سے چار انچ اوپر معلق ہو کر سفر کرتی ہے

جاپان میں ایک ٹرین نے اپنے آزمائشی سفر کے دوران چھ سو کلومیٹر زیادہ کی رفتار سے سفر کر کے نیا عالمی ریکارڈ قائم کر دیا ہے۔

جاپانی ریلوے کے مطابق یہ ریکارڈ سات بوگیوں پر مشتمل ’میگلیو‘ ٹرین نے ماؤنٹ فیوجی کے نزدیک منگل کو اس وقت بنایا جب اس نے 603 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار حاصل کی۔

حکام کا کہنا ہے کہ ٹرین تقریباً 11 سیکنڈ تک چھ سو کلومیٹر سے زیادہ کی رفتار سے سفر کرتی رہی۔

اس سے قبل ٹرین کی تیز ترین رفتار کا ریکارڈ ایسی ہی ایک ٹرین کا تھا جس نے گذشتہ ہفتے ہی 590 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کر کے 2003 میں قائم کیا گیا ریکارڈ توڑا تھا۔

’میگلیو‘ دراصل میگنیٹک لیویٹیشن کا مخفف ہے اور یہ ٹرین برقی چارج شدہ مقناطیسوں کی قوت کی مدد سے پٹڑی سے چار انچ اوپر معلق ہو کر سفر کرتی ہے۔

جاپانی ریلوے کے حکام سنہ 2027 تک اس ٹرین کو عام استعمال کے لیے پیش کرنا چاہتے ہیں اور اس سلسلے میں پہلی ٹرین ٹوکیو اور ناگویا کے درمیان چلائی جائے گی۔

’میگلیو‘ ٹرین کے لیے مقررہ حدِ رفتار 500 کلومیٹر رکھی جائے گی اور یہ ان دونوں شہروں کے درمیان 286 کلومیٹر کا فاصلہ 40 منٹ میں طے کرے گی۔

اس وقت جاپان میں تیز ترین بلٹ ٹرین یہ فاصلہ ڈیڑھ گھنٹے کے قریب وقت میں طے کرتی ہے۔

’میگلیو‘ ٹرین کے منصوبے پر جاپانی حکومت خطیر رقم خرچ کر رہی ہے اور صرف ٹوکیو اور ناگویا کے درمیان یہ ٹرین چلانے کے منصوبے پر 100 ارب ڈالر کے قریب اخراجات آئیں گے۔

اسی بارے میں