بےقابو خلائی جہاز جمعے کو زمین پر گرے گا

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پرواز کے چند لمحے بعد رابطہ ٹوٹ جانے کی وجہ سے خلائی جہاز کنٹرول سے باہر ہو گیا تھا

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ گذشتہ ہفتے خلائی سفر کے آغاز پر ہی بےقابو ہو جانے والا روسی خلائی جہاز جمعے کو زمین پر گر کر تباہ ہو جائے گا۔

ایم -27 ایم نامی یہ مال بردار خلائی جہاز منگل کو قزاقستان سے خلا میں بھیجا گیا تھا لیکن کچھ ہی لمحوں میں اس سے رابطہ منقطع ہو گیا تھا۔

روس خلائی ایجنسی روس كوسموس کا کہنا ہے کہ جہاز کے گرنے کا امکان جمعرات کی شب ساڑھے دس بجے سے جمعے کی صبح سات بجے تک کے درمیان ہے۔

اس جہاز پر تین ٹن ضروری سامان اور آلات موجود ہیں تاہم سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ خلائی جہاز جیسے ہی زمینی کی فضا میں داخل ہو گا، اس کے ٹکڑے ٹکڑے ہو جائیں گے۔

روس كوسموس کا کہنا ہے، ’روسی جہاز کے صرف چند انتہائی چھوٹے چھوٹے ٹکڑے ہی زمین کی سطح تک پہنچیں گے۔‘

سائنسدانوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ خلائی جہاز کے یہ ٹکڑے بھی خشکی پر نہیں بلکہ سمندر میں گریں گے۔

یہ خلائی جہاز زمین سے تقریباً 420 کلو میٹر دور خلا میں موجود بین الاقوامی خلائی سٹیشن پر چھ خلابازوں کو خوراک، ایندھن، آکسیجن اور کپڑے فراہم کرنے والا تھا۔ تاہم رابطہ ٹوٹ جانے کی وجہ سے یہ کنٹرول سے باہر ہو گیا۔

اس کے بعد سے یہ آہستہ آہستہ زمین کی جانب کھنچا چلا آ رہا ہے اور سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس کے گرنے کے امکانات مشرقی امریکہ، کولمبیا، برازیل یا انڈونیشیا میں ہیں۔

اسی بارے میں