روسی خلائی راکٹ زمین پر گر کی تباہ

تصویر کے کاپی رائٹ epa
Image caption پروٹون ایم کے اڑان بھرنے کے آٹھ منٹ بعد ہی اس میں خرابی پیدا ہوگئی تھی

روسی خلائی ایجنسی کا کہنا ہے کہ میکسیکن سیٹلائٹ سے لیس ایک روسی راکٹ میں خرابی کے باعث وہ سائبیریا میں گرگیا ہے۔

روس کی خلائی ایجنسی کا کہنا ہے کہ ہفتے کی صبح قزاقستان سے پروٹون ایم راکٹ کو فضا بھیجا گیا تھا اور فضا میں جانے کے چند منٹوں بعد اس میں خرابی پیدا ہوگئی تھی۔

روسکوسموس کے مطابق اس حادثے کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔

روسی خلائی پروگرام کو حالیہ چند ماہ میں کئی حادثات کا سامنا کرنا پڑا ہے جس میں ایک بغیر پائلٹ کی سپلائی شپ کا حادثہ بھی شامل ہے۔

منگل کو روس کو انٹرنیشنل سپیس سٹیشن سے اپنے تین خلابازوں کی واپسی کو معطل کرنا پڑنا جب 28 اپریل کو ایک بے قابو کارگو جہاز زمین کے مدار میں دوبارہ داخل ہونے پر جل گیا۔

پروٹون ایم کے اڑان بھرنے کے آٹھ منٹ بعد ہی اس میں خرابی پیدا ہوگئی تھی، جسے روسی خلائی ایجنسی روسکوموس پر براہ راست دکھایا گیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ ’بوسٹر راکٹ کے بورڈ میں کوئی خرابی پیدا ہوئی تھی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ذرائع کا کہنا ہے کہ پروٹون ایم راکٹ کے ساتھ اس وقت رابطہ منقطع ہوگیا جب اسے تھرڈ سٹیج راکٹ سے الگ ہونا تھا

روسکوسموس کا کہنا ہے کہ ’اس وقت ہنگامی صورتحال پیدا ہوگئی جب پروٹون ایم راکٹ کو میکس سیٹ-1 سیٹلائٹ کے ساتھ فضا میں بھیجا گیا۔‘

ایجنسی کے مطابق ’وجوہات کی نشاندہی کی جاچکی ہیں۔‘

خلائی شعبے کے ذرائع کا کہنا ہے کہ میکسیکن سیٹلائٹ تاحال تلاش نہیں کی جا سکی اور پروٹون قسم کے راکٹوں کو خرابی کی وجوہات سامنے آنے تک فضا میں نہیں بھیجا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پروٹون ایم راکٹ کے ساتھ اس وقت رابطہ منقطع ہوگیا جب اسے تھرڈ سٹیج راکٹ سے الگ ہونا تھا۔

روسی خبررساں اداروں نے خلائی شعبے کے ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ تھرڈ سٹیج راکٹ کا انجن حادثاتی طور پر بند ہوگیا تھا۔

واضح رہے کہ روس مغربی اور ایشیائی ممالک کی کمرشل سیٹلائٹس سے بڑے پیمانے پر زرمبادلہ کماتا ہے۔

پروٹون ایم سیٹلائٹس کو فضا میں بھیجنے کے لیے روس کا اہم ترین ذریعہ ہے تاہم حالیہ برسوں میں اس قسم کے راکٹوں میں فنی خرابیاں بھی سامنے آئی ہیں۔

اسی بارے میں