اٹلی میں طالب علموں کے لیے ’منفرد‘ ہوم ورک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سکول استاد سیزر کاٹا کا خیال ہے کہ گرمیوں کی چھٹیوں میں طالب علموں کو نصابی سرگرمیوں میں کم وقت صرف کرنا چاہیے

ایک اطالوی استاد نے اپنے طالب علموں کو معمول کے مطابق چھٹیوں کا نہ دینے فیصلہ کیا ہے اور انھیں زندگی کے مشوروں پر مشتمل ایک فہرست فراہم کی ہے۔

اٹلی میں وسط جون سے وسط ستمبر تک سکولوں میں گرمیوں کی تین مہینے کی چھٹیوں میں بیشتر طالب علموں کو سکول کا کام دیا جاتا ہے۔

لیکن اٹلی کے وسطی علاقے لے مارچے کے ایک سیکنڈری سکول استاد سیزر کاٹا کا خیال ہے کہ گرمیوں کی چھٹیوں میں طالب علموں کو نصابی سرگرمیوں میں کم وقت صرف کرنا چاہیے۔

15 نکات پر مشتمل گھر کے کام کی فہرست میں وہ کہتے ہیں: ’کم از کم ایک بار صبح کے وقت سورج نکلتا ہوا دیکھیں۔‘

ان کی یہ 15 نکات پر مشتمل فہرست انٹرنیٹ پر بہت زیادہ شیئر کی جارہی ہے۔

اس فہرست میں طالب علموں کو صبح کے وقت ساحل سمندر پر چہل قدمی کرنے کا بھی کہا گیا کہ وہ ’اس دوران سوچیں کہ وہ زندگی میں کس سے محبت کرتے ہیں،‘ اس کے علاوہ جب ان کا جی چاہے تو بلاجھجک رقص کریں کیونکہ ’گرمیاں ایک رقص کی طرح ہیں، اور ان کا حصہ نہ بننا بے وقوفی ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook
Image caption 15 نکات پر مشتمل یہ فہرست انٹرنیٹ پر بہت زیادہ شیئر کی جارہی ہے

سیزر کاٹا یہ بھی نہیں چاہتے کہ ان کے طالب سکول کو بالکل بھول جائیں۔ وہ اس خواہش کا اظہار کرتے ہیں کہ طالب علم وسیع مطالعہ کریں اور گذشتہ برس سیکھے گئے نئے الفاظ اور اصلاحات کا استعمال کریں۔ وہ کہتے ہیں: ’آپ جتنی زیادہ چیزوں کے بارے میں بات کریں گے، اتنا زیادہ آپ سوچ سکیں گے، اور جتنی زیادہ چیزوں کے بارے میں آپ سوچ سکیں گے، اتنا زیادہ ہی اپنے آپ کو آزاد محسوس کریں گے۔‘

اس استاد کی فیس بک پوسٹ تقریباً تین ہزار بار شیئر کی جا چکی ہے اور اس کی حمایت میں سینکڑوں تبصرے کیے جا چکے ہیں۔

ایک تبصرہ ہے: ’کاش میرا استاد بھی آپ جیسا ہوتا جو درون بینی کی حوصلہ افزائی کرتا۔‘

اس پوسٹ نے کئی والدین کو بھی متاثر کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ انھوں نے یہ فہرست اپنے بچوں کو بھی دکھائی ہے۔ ایک فیس بک صارف لکھتے ہیں: ’گھر کا کام ساری عمر کا ہے، کسی ایک موسم کا نہیں۔‘ جبکہ ایک اور صارف کا کہنا تھا: ’اگر استاد آپ جیسا ہے تو میں کل سے دوبارہ سکول جارہا ہوں۔‘

اسی بارے میں