’شکاری‘ اپنی ہی گولی کا شکار ہوگیا

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ارمادیلو وسطی اور جنوبی امریکہ کا ایک دودھ پلانے والا جانور ہے جس کی کھال سخت اور استخوانی خول سے ڈھکی ہوتی ہے

امریکی ریاست ٹیکسس میں پولیس کے مطابق ایک جانور پر چلائی جانے والی گولی اس کے جسم سے ٹکرا کر واپس آکر گولی چلانے والے شخص کے سر پر لگ گئی جس سے وہ زخمی ہوگیا۔

یہ واقعہ مشرقی ٹیکسس کے علاقے ماریٹا میں پیش آیا۔

اس شخص نے جانور پر تین گولیاں چلائیں جن میں کم از کم ایک گولی اس کی سخت کھال سے ٹکرا کر واپس آکر لگی۔

امریکی اخبار یو ایس اے ٹوڈے کے مطابق مسلح شخص کے جبڑے کا علاج معالجہ کیا جا رہا ہے تاہم جانور ارمادیلو تاحال لاپتہ ہے اور اس کے بارے میں واضح نہیں ہوسکا کہ وہ زندہ ہے یا مر گیا۔

پولیس اہلکار لاری رورے نے خبررساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ شوٹر نے جمعرات کی صبح اپنی ملکیتی زمین پر جانور کر دیکھنے کے بعد اس پر گولی چلائی تھی۔

اہلکار کا کہنا تھا: ’وہ باہر گیا اور اس نے 33. ریوالور اٹھائی اور تین بار ارمادیلو پر گولی چلائی۔‘

جانوروں کے حقوق کے علمبردار اور کامیڈی فنکار رکی گرویاس نے اس واقعے پر تبصرہ کرتے ہوئے ’کرمادیلو‘ کا لفظ ٹویٹ کیا۔

جمعرات کے پیش آنے والا واقعہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ نہیں ہے۔ حالیہ مہینوں میں اس سے پہلے بھی امریکہ کے جنوبی علاقوں میں ارمادیلو سے گولی ٹکرا کر انسانوں کو لگنے کے واقعات پیش آچکے ہیں۔

مقامی ٹی وی ڈبلیو اے ایل بی نیوز کے مطابق اپریل میں جارجییا میں ایک شخص نے اپنی ساس کو زخمی کر دیا تھا جب اس کی جانب سے چلائی گئی گولی ارمادیلو سے ٹکرا کر واپس آئی۔

تاہم بعدازاں اس جانور کو مار دیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ ارمادیلو وسطی اور جنوبی امریکہ کا ایک دودھ پلانے والا جانور ہے جس کی کھال سخت اور استخوانی خول سے ڈھکی ہوتی ہے۔

اسی بارے میں