بعل شمین کی تباہی کی سیٹیلائٹ تصاویر

تصویر کے کاپی رائٹ CNES 2015

ایک فراسنسیسی سیٹیلائٹ نے شام کے شہر پیلمائرہ میں واقع بعل شمین عبادت گاہ کو تباہ کیے جانے کے بعد کی تصاویر لی ہیں۔

اس عبادت گاہ کی تباہی سے قبل کی تصویر پلیڈز ارتھ آبزرویٹری سسٹم نے لی ہے جو ایئر بس ڈیفنس اینڈ سپیس کے تحت کام کرتا ہے۔ یہ تصویر 22 مئی کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ CNES 2015

عبادت گاہ کو تباہ کرنے کی تصویر 25 اگست کی ہے۔ اور اس تصویر میں صاف ظاہر ہے کہ بلشامن عبادت گاہ کا اب کوئی وجود نہیں رہا۔

اقوام متحدہ کی ایجنسی نے بھی اس بات کی تصدیق کی ہے کہ اب بعل شمین عبادت گاہکا وجود نہیں رہا۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے اقوام متحدہ کی ٹریننگ اینڈ ریسرچ ایجنسی کے ترجمان نے کہا ’اب وہ جگہ بالکل ہموار ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

واضح رہے کہ شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ نے یونیسکو کا عالمی ورثہ قرار دی جانے والی جگہ پیلمائرا میں واقع قدیم عبادت گاہ بعل شمین کو تباہ کر دیا تھا۔

بعل شمین پہلی سنہِ عیسوی میں تعمیر کیا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

اس سال مئی میں دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں نے یونیسکو کی عالمی ورثے کی فہرست میں شامل اس قدیم شہر پر قبضہ کیا تھا۔

اسی بارے میں