ریکارڈ ساز خلاباز کی زمین واپسی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پادالکا نے کہا ہے کہ وہ اپنے اگلے مشن میں خلا میں ایک ہزار دن مکمل کرنا چاہتے ہیں

روسی خلاباز گینادی پادالکا خلا میں سب سے زیادہ وقت گزارنے کے بعد زمین پر واپس آ گئے ہیں۔

57 سالہ خلاباز کا حالیہ مشن 168 دن جاری رہا۔ گذشتہ پانچ خلائی سفروں کے دوران وہ خلا میں کل 879 دن گزار چکے ہیں۔

انھوں نے دو ماہ کی برتری سے اپنے ہم وطن خلاباز سرگے کریکالیف کا ریکارڈ توڑا ہے جو انھوں نے 2005 میں چھ مشنز کے دوران قائم کیا تھا۔

پادالکا اور بین الاقوامی خلائی سٹیشن کے دو دوسرے خلاباز سویوز خلائی جہاز میں قازقستان صبح سویرے اترے۔

گینادی پادالکا

  • پائلٹ کی تربیت حاصل کی اور روسی فضائیہ میں کرنل رہے
  • خلا میں پہلا سفر روسی خلائی سٹیشن ’میر‘ کا
  • واحد خلاباز جنھوں نے بین الاقوامی خلائی سٹیشن کی چار بار کمان سنبھالی
  • 28 جون 2015 کو خلا میں سب سے زیادہ وقت گزارنے کا ریکارڈ توڑا
  • دس بار خلا میں چہل قدمی کر چکے ہیں

زمین پر اترنے کے بعد زمینی عملے کے ارکان نے تینوں خلابازوں کو جھلسے ہوئے خلائی جہاز سے نکالا اور ان کا طبی معائنہ کیا۔ یاد رہے کہ زمین کی فضا میں داخل ہونے کے بعد جہاز کا باہری حصہ گرم ہو کر جھلس جاتا ہے۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پادالکا نے چائے کا گھونٹ بھرتے ہوئے کہا: ’میں ٹھیک ہوں۔‘

پادالکا کے ساتھ زمین پر لوٹنے والے خلاباز ڈنمارک کے آندریاس موگنسن اور قزاقستان کے آیدن ایمبیتوف ہیں۔ یہ دنوں پادالکا کے مقابلے پر نوآموز ہیں اور انھوں نے اپنے پہلے مشن پر خلا میں صرف دس دن گزارے۔

زمین کی سطح سے چار سو کلومیٹر کے فاصلے پر واقع خلائی سٹیشن پر اب بھی چھ خلاباز موجود ہیں۔

اسی بارے میں