لہو رنگ چاند کو گرہن

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پورا چاند گرہن مشرقی شمالی اور جنوبی امریکہ، مغربی افریقہ اور مغربی یورپ میں نظر آئے گا

پیر کو مکمل چاند گرہن ہوگا جس سے نہ صرف چاند کا رنگ تانبے جیسا نظر آئے گا بلکہ آسمان میں یہ معمول سے کچھ بڑا بھی دکھائی دے گا۔

چاند کو گرہن لگنے کے ساتھ ساتھ اس مرتبہ اس جرمِ فلکی کے ساتھ ایک اور سماوی مظہر ہوگا جسے ’سپر مون‘ کہتے ہیں۔ اس قدرتی مظہر کے لیے ضروری ہے کہ نہ صرف چاند کا زمین سے فاصلہ کم سے کم ہو بلکہ چاند پورا بھی ہو ۔

یہ اس سال کا دوسرا مکمل چاند گرہن ہوگا جسے سنہ 2008 کے بعد پہلی مرتبہ برطانیہ میں دیکھا جا سکے گا۔

چاند گرہن برطانوی وقت کے مطابق پیر کی صبح ایک بجکر 11 منٹ پر شروع ہوگا، تین بج کر 47 منٹ پر گرہن اپنے عروج پر ہوگا اور صبح پانچ بج کر 22 منٹ پر ختم ہو جائے گا۔

پورا چاند گرہن مشرقی شمالی اور جنوبی امریکہ، مغربی افریقہ اور مغربی یورپ میں نظر آئے گا۔

تاہم شمالی امریکہ کے مغربی حصوں، یورپ، افریقہ، مشرقِ وسطیٰ اور جنوبی ایشا میں فلک بین صرف جزوی چاند گرہن دیکھ سکیں گے۔

برطانیہ میں پیر کو علی الصبح دیکھنے والوں کو چاند زمین کے سائے سے گزرتا ہوا ملے گا۔ شمالی اور جنوبی امریکہ میں چاند گرہن اتوار کی شام کو ہی نظر آ جائے گا۔

سنہ 2008 میں برطانیہ میں پورا چاند گرہن نظر آیا تھا جبکہ آئندہ سنہ 2019 میں ایسا ہوگا۔

سپر مون ہونے کی وجہ سے چاند کا ہمارے سیارے زمین سے فاصلہ کم سے کم ہوگا جس کی وجہ سے چاند آسمان میں سات سے آٹھ فیصد بڑا نظر آئے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ NASA
Image caption مکمل چاند گرہن میں زمین، سورج اور چاند اپنے مدار میں رہتے ہوئے سیدھی لکیر میں آ جاتے ہیں

مکمل چاند گرہن کے دوران چاند تانبے کے رنگ کا نظر آئے گا جس کی وجہ سے اس کا نام ’بلڈ مون‘ بھی پڑ گیا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ زمین کی فضا نیلگوں روشنی کو سرخ کی نسبت زیادہ طاقت سے بکھیرتی ہے جبکہ اس بار فضا کو نیلے کے بجائے تانبے کے رنگ کی روشنی بکھیرنا ہوگی۔ یہی وجہ ہے کہ چاند کی سطح تک پہنچنے والی روشنی نیلی نہیں بلکہ تانبے کے رنگ کی دکھائی دے گی۔

اس گرہن کے دوران چاند حُوت کے اندر واقع ستاروں کے جھرمٹ میں ہوگا۔

مکمل چاند گرہن میں زمین، سورج اور چاند اپنے مدار میں رہتے ہوئے سیدھی لکیر میں آ جاتے ہیں اور چاند، سورج سے زمین کے مخالف جانب آ جاتا ہے۔

جوں جوں پورا چاند ہمارے سیارے کے سائے میں چلتا ہے، اس کی روشنی ڈرامائی طور پر کم ہوتی جاتی ہے لیکن زمین کی فضا سے گزرنے والی سورج کی روشنی کے باعث یہ نظر آتا رہتا ہے۔

رائل ایسٹرونومیکل سوسائٹی کا کہنا ہے کہ سورج گرہن کے برعکس، مکمل چاند گرہن کو دیکھنا محفوظ ہے اور اس دیکھنے کے لیے خصوصی آلات درکار نہیں۔

سنہ 2019 میں برطانیہ میں مکمل چاند گرہن پھر دکھائی گا۔

اسی بارے میں