عدالتی حکم کے باوجود جاپان کا منکی وہیل کے شکار کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جاپان نے حالیہ پروگرام 2005 میں شروع کیا تھا اور اس وقت سے لے کر اب تک جاپان 3600 منکی وہیل شکار کر چکا ہے: عالمی عدالتِ انصاف

جاپان نے عالمی عدالتِ انصاف کی جانب سے وہیل مچھلی کے شکار پر پابندی کے حکمنامے کے باوجود اگلے برس سےقطب جنوبی میں منکی وہیل مچھلی کا شکار شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔

جاپان کی جانب سے ایک سال سے زائد عرصے سے اس وہیل کا شکار نہیں کیا جا رہا۔

وہیل کا 10 ہزار کلومیٹر کا سفر

وہیل مچھلیوں کا مدفن دریافت

سمندر کے دیو

حکومتِ جاپان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وہ عدالتی فیصلے کا خیال کرے گی اور اس کی جانب سے وہیل کے شکار کا ’سائنسی‘پروگرام بہت محدود ہے۔

تاہم آسٹریلیا اور برطانیہ کی حکومت کے علاوہ ماحول کے تحفظ کے لیے کام کرنے والے گروہ جاپان کے اس فیصلے پر تنقید کر رہے ہیں۔

آسٹریلیا کے وزیرِ ماحولیات گریگ ہنٹ نے کہا ہے کہ وہ کسی بھی طریقے سے وہیل کو مارنے کی نام نہاد ریسرچ کو نہیں مانتے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گذشتہ برس آسٹریلیا نے جاپان کے خلاف نیدر لینڈ میں بین القوامی عدالتِ انصاف میں مقدمہ جیتا تھا

دوسری جانب برطانیہ کی وزارتِ دفاع کے بیان میں جاپان کے اس اعلان پر گہری مایوسی کا اعلان کیا گیا ہے۔

ٹوکیو میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار رپرڈ فنگ فیلڈ کا کہنا ہے کہ جنوبی سنمدر کی جانب بڑھنے کے لیے چندہ ہی ہفتوں میں وہیل کے شکار کے لیے بیڑے ساحل پر ہوں گے۔

نئے منصوبے کے تحت جاپان ہر سال پکڑی جانے والی منکی وہیل کی تعداد کو دو تہائی کم کر کے 333 کرے گا۔

جاپانی حکام نے کہا ہے کہ ان کا منصوبہ سائنسی طور پر موزوں ہے تاہم مخالفین خاص طور پر آسٹریلیوی حکومت اس پر مطمعین نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ twitter

آسٹریلیا کے وزیرِ ماحولیات گریگ ہنٹ کہتے ہیں کہ جاپان انفرادی طور پر یہ فیصلہ نہیں کر سکتا کہ اس نے تمام سائنسی سوالات کا مکمل طریقے سے خیال رکھا ہے۔

گذشتہ برس آسٹریلیا نے جاپان کے خلاف نیدر لینڈ میں بین القوامی عدالتِ انصاف میں مقدمہ جیتا تھا۔ اس مقدمے میں عدالت نے کہا تھا کہ جاپان کا وہیل کے شکار کا ’سائنسی‘ پروگرام بالکل بھی سائنسی نہیں ہے اس لیے ٹوکیو اپنے بیڑوں کو واپس بلا لے۔

ہمارے نامہ نگار کے مطابق عدالتی فیصلے میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ عدالت کو اس بات پر یقین نہیں کہ جاپان کے لیے وہیل کا مطالعہ کرنے کے لیے اسے مارنا ضروری ہے۔

جاپان نے منکی وہیل کے شکار کا آغاز سنہ 1987 میں کیا تھا۔

عالمی عدالتِ انصاف کا کہنا ہے کہ جاپان نے حالیہ پروگرام 2005 میں شروع کیا تھا اور اس وقت سے لے کر اب تک جاپان 3600 منکی وہیل شکار کر چکا ہے۔

اسی بارے میں