آئی فون ان لاک: ایف بی آئی کی ایک اور پیشکش

 آئی فون تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایپل کی طرف سے سید فاروق کے آئی فون کو ان لاک نہ کرنے کے اصرار پر بہت بحث ہوئی ہے

امریکی تحقیقاتی ایجنسی ایف بی آئی نے سان برنارڈینو کے مبینہ قاتل سید فاروق کے آئی فون کو ان لاک کرنے کے انکشاف کے بعد ایک اور آئی فون کو ان لاک کرنے کی پیشکش کی ہے۔

خبر رساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق آرکینسا میں پولیس ایک جوڑے کے قتل کے سلسلے میں دو ٹین ایجرز کے آئی فون اور آئی پوڈ ان لاک کروانا چاہتی ہے۔

ایف بی آئی نے کہا ہے کہ وہ اس قتل کے کیس میں پولیس کی مدد کرے گا۔

سید فاروق اور ان کی اہلیہ کو دسمبر میں اس وقت گولیاں مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا جب انھوں نے مبینہ طور پر 14 افراد کو قتل کر دیا تھا۔

آرکینسا میں جج نے مقدمے کی سماعت کو ملتوی کر دیا تاکہ استغاثہ ایف بی آئی سے مدد لے سکے۔

18 سالہ ہنٹر ڈریسکلے اور 15 سالہ جسٹن سٹیٹن کو گذشتہ جولائی کو رابرٹ اور پیٹرشیا کوگڈل کو کونوے میں ان کے گھر پر قتل کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔

جوڑے نے سٹیٹن کی اپنے پوتے کی طرح پرورش کی تھی۔

فالکنر کاؤنٹی کے اٹارنی کوڈی ہلینڈ نے اے پی کو بتایا کہ ’ہم ہمیشہ ہی (ایف بی آئی کے) قانون نافذ کرنے والے مقامی شراکت کاروں کے ساتھ تعاون اور مدد کرنے میں رضامندی کی تعریف کرتے رہے ہیں۔‘

ڈریکسلے کی ایک اٹارنی نے اے پی کو بتایا وہ فون میں ڈیٹا کے متعلق پریشان نہیں ہیں۔

اس سے قبل ایف بی آئی نے ایپل سے کہا تھا کہ وہ ایسا نیا سافٹ ویئر بنائے جس کی مدد فاروق کے آئی فون تک رسائی حاصل کی جا سکے۔

تاہم کمپنی نے ایسا کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

اسی بارے میں