’آئی پی ایل میں پاکستانی کوچ تو کرکٹر کیوں نہیں؟‘

تصویر کے کاپی رائٹ PR

بالی وڈ کے نامور فنکار رشی کپور نے اپنی ایک حالیہ ٹویٹ میں لکھا ہے کہ ’اگر انڈین پریمیئر لیگ میں پاکستانی کوچ اور کمنٹیٹر شامل ہو سکتے ہیں تو کرکٹر کیوں نہیں؟‘

پاکستان بھارت کے درمیان کشیدہ تعلقات میں بہتری کے لیے گاہے بگاہے تجاویز سامنے آتی رہتی ہیں اور ان پر ردِ عمل بھی ہر بار شدید ہوتا ہے۔

رشی کپور بھی اسی فہرست کا ایک حصہ ہیں مگر جیسا کہ ہر بار دونوں جانب سے ایسی بات کرنے والے پر اعتراضات اور تنقید کی جاتی ہے ایسا ہی رشی کپور کی ٹویٹ پر ردِعمل تھا۔

رشی کپور کی اس ٹویٹ پر انھیں جواباً سینکڑوں ٹویٹس میں تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور دوسری جانب اُن کی تعریف بھی کی گئی۔

پوجا گنگولی نے لکھا کہ ’دہشت گرد انڈیا میں امن کے نام پر ہی آئیں گے اس لیے نہ بات چیت کی جائے اور نہ ہی لڑا جائے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

سدھانشو نے لکھا کہ ’میں ان کمنٹیٹروں اور کوچوں کو بھی فارغ کر دوں گا بجائے اس کے لیے کھلاڑیوں کو کھیلنے آنے دوں۔‘

مگر سب تنقید کرنے والے نہیں تھے جیسا کہ عظمیٰ نے لکھا: ’آپ کی رائے پڑھ کر خوشی ہوئی مگر اپنے دل کی اچھائی پر یقین رکھیں۔‘

عثمان خالد نے لکھا کہ ’ایک سمجھدار انسان ہی ایسا سوچ سکتا ہے۔‘

پاکستان کی آسکر ایوارڈ یافتہ ہدایتکارہ شرمین عبید چنوئے نے رشی کپور کو مخاطب کر کے لکھا: ’دونوں جانب سے منفی تبصروں کو نظر انداز کریں۔ امن کی جس خواہش کا اظہار آپ نے کیا، وہ وقت کی ضرورت ہے۔ اور کتنی نسلیں لڑیں گی؟‘

اسی بارے میں