لاعلاج ڈپریشن کے لیے جادوئی کھمبی ’امید کی کرن‘

تصویر کے کاپی رائٹ THINKSTOCK
Image caption مشروم یا کھمبی کا ایک کیمیائی جز ڈپریشن کے لیے علاج کے طور پر پیش کیا جا رہا ہے

ایک خاص قسم کی کھمبی یا مشروم میں پائے جانے والے ایک کیمیائی جز سے ڈپریشن یا دائمی افسردگی کا شکار اُن مریضوں کی امیدوں میں اضافہ ہوا ہے جن کے مرض لاعلاج ہیں۔

یہ خاص کیمیائی جز عام لوگوں میں فریبِ نظر اور واہمے (ہیلوسی نیشن) پیدا کرتا ہے۔

یہ تحقیق ’لانسِٹ سائکائٹری میگزین میں شائع ہوئی ہے۔

اس میں 12 مریضوں پر تجربہ کیا گیا جس میں سے آٹھ مریض اب ڈپریشن سے صحت یاب ہو چکے ہیں کیونکہ ان پر اس دوا نے ’پراسرار اور روحانی طور پر‘ کام کیا ہے۔

ماہرین نے اس تحقیق کو ’امید افزا‘ کہتے ہوئے اس کا خیر مقدم کیا ہے لیکن ابھی اس سے پوری طرح سے تیر بہدف نسخہ قرار نہیں دیا، اور اب اس دوا کے وسیع پیمانے پر تجربات کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔

تجربے کے آغاز پر نو افراد شدید ڈپریشن کا شکار تھے جبکہ تین کا مرض نسبتاً معتدل تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ THINKSTOCKS
Image caption مشروم کے اثرات کو بعض مریضوں نے پراسرار اور روحانی بتایا

ان میں سے ہر ایک نے بغیر کسی کامیابی کے کم از کم دو مختلف طریقہ علاج پر عمل کیا تھا، جبکہ ایک نے تو 11 مختلف علاج آزمائے تھے۔ ایک مریض 30 سال سے اس مرض کا شکار تھا۔

یہ تحقیق امپیریئل کالج لندن میں کی گئی اور ابتدا میں مریضوں کو جادوئی کھمبی کے ہیلوسی نوجینک کیمیائی جز سے تیار کردہ ’سائلوسائبن‘ نامی دوا کی ہلکی خوراک دی گئی۔ تحقیق کاروں نے بتایا کہ اس کے بعد انھیں زیادہ مقدار میں دوا دی گئی جو ’بہت سی کھمبیوں کے برابر تھی۔‘

ایک محقق ڈاکٹر روبن کارہارٹ ہیرس نے بتایا: ’سائلوسائبن کا تجربہ بہت اچھا رہا اور بعض اوقات لوگوں نے اسے پراسرار اور روحانی تجربے سے تعبیر کیا ہے۔‘

اسی بارے میں