معمولی عارضہِ قلب کی علامات ہیں تو فوری اسپرین

برطانیہ کی آکسفورڈ یونیورسٹی کے معروف محققین کا کہنا ہے اگر لوگوں میں معمولی عارضہِ قلب کی علامات ہوں تو انھیں فوری طور اسپرین لینی چاہیے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ نازک گھنٹوں کے دوران اور معمولی عارضہِ قلب کے بعد اسپرین لینے سے دل کے بڑے دورے کی شدت میں آٹھ فیصد کمی ہو جاتی ہے۔

٭ ’ایسپرین کی محدود خوراک کینسر کےعلاج میں مددگار‘

٭ کینسر سے بچاؤ میں ایسپرین کتنی کارآمد؟ برطانیہ میں کلینکل تجربے شروع

یہ تحقیق جریدے لینسیٹ میں شائع ہوئی ہے۔

تحقیق کے نتائج کے مطابق دل کی بیماری کے دوران اسپرین کے فوائد کے بارے غلط اندازے لگائے گئے ہیں۔

خیال رہے کہ ایسپرین کے روزانہ استمال سے صحت کو شدید خطرات لاحق ہو سکتے ہیں جیسے السر، معدے یا دماغ سے خون رسنا وغیرہ تاہم عارضہِ قلب میں مبتلا بہت سے مریضوں کو روزانہ کی بنیاد پر ایسپرین تجویز کی جاتی ہے۔

اسی بارے میں