ایسر کا خم دار سکرین والا لیپ ٹاپ متعارف

تصویر کے کاپی رائٹ ACER

تائیوان کی ٹیکنالوجی کی مشہور کمپنی ایسر نے خم دار سکرین والا دنیا کا تیز ترین لیپ ٹاپ متعارف کروایا ہے۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ سکرین میں جدت کی وجہ سے اس مشین پر ویڈیو گیمز کھیلنا آسان ہو جائے گا۔ اس سے پہلے بھی ٹی وی بنانے والی کئی کمپنیاں خم دار سکرین بنا رہی ہیں لیکن ایسر کی یہ سکرین کار آمد ثابت ہو گی۔

جرمنی کے شہر برلن میں تائیوان کی کمپنی نے اپنی اس پراڈکٹ کے بارے میں بتایا۔

یاد رہے کہ رواں ہفتے کے دوران برلن میں اٹیکنالوجی شو میں ٹیکنالوجی کے دوسرے بڑے برینڈ جیسے سام سنگ، لینووا، ڈی جی آئی اور سونی بھی اپنی نئی مصنوعات متعارف کروائے گا۔ ایسر کی نوٹ بک کی سکرین معمول کے لحاظ سے بڑی ہے اور یہ 21 انچ لمبی ہے لیکن اس کی شکل و صورت کچھ اس طرح کی ہے کہ کمپنی اسے دنیا اپنی طرز کی پہلی ’سکرین‘ قرار دیا ہے۔

ایسر کے یورپ کے سربراہ جان میڈیما نے بی بی سی کو بتایا کہ ’اس سکرین کا خم آنکھوں کے خم کی طرح قدرتی ہے جس سے زیادہ بڑا منظر دیکھنے کو ملتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ ’اس کے ذریعے صارفین گمیز کو زیادہ غور سے دیکھ سکیں جیسے دشمن کو تلاش کرنا یا ریسنگ گیمز میں شیشے میں دیکھنا وغیرہ۔ صارفین کو گیمنگ کا زبردست تجربہ ملے گا۔‘

یاد رہے کہ خم دار سکرین کا سینما میں بڑے پیمانے پر استعمال ہو رہا ہے اور پہلی بار اس طرز کا ٹی وی تین سال قبل مارکیٹ میں آیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ ACER

کمپنی کا کہنا ہے کہ اس لیپ ٹاپ کی سکرین میں بہت زیادہ گہرائی محسوس ہوتی ہے اور کسی بھی منظر کی باریکیوں کو با آسانی دیکھا جا سکتا ہے۔

ٹیکنالوجی میں اعلیٰ درجے کی مصنوعات بنانے والی کمپنی سام سانگ کے حالیے آنے والے ٹی وی کے دو ماڈلز میں بھی خم دار سکرین ہے۔

اسی بارے میں