آفریدی اور میانداد میں زبانی اور ممکنہ عدالتی جنگ

شاہد آفریدی تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ورلڈ ٹی 20 میں پاکستانی ٹیم کی ناکامی کے بعد شاہد آفریدی کا بین الاقوامی کریئر تقریباً ختم ہوچکا ہے

آل راؤنڈر شاہد آفریدی نے پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان جاوید میانداد کے خلاف عدالتی چارہ جوئی کا فیصلہ کیا ہے ۔

شاہد آفریدی نے یہ فیصلہ جاوید میانداد کے ان ریمارکس کے بعد کیا ہے جن میں انھوں نے شاہد آفریدی پر مبینہ طور پر میچ فکسنگ میں ملوث ہونے کا الزام عائد کیا تھا۔

ان دونوں کرکٹرز کے درمیان زبانی جنگ اس وقت شروع ہوئی تھی جب اتوار کے روز ایک تقریب کے دوران شاہد آفریدی سے یہ سوال کیا گیا کہ جاوید میانداد کا کہنا ہے کہ آپ پیسوں کے لیے اپنا الوداعی میچ چاہتے ہیں جس پر شاہد آفریدی نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ جاوید میانداد کو ساری زندگی پیسوں کا مسئلہ رہا اور ابھی بھی رہا ہے۔

شاہد آفریدی کا کہنا تھا کہ اتنے بڑے کرکٹر کو ایسی چھوٹی بات نہیں کرنی چاہیے تھی۔ یہی فرق عمران خان اور جاوید میانداد میں تھا۔

شاہد آفریدی کے اس بیان کے بعد جاوید میانداد نے ایک نجی ٹی وی چینل پر شاہد آفریدی پر تنقید کرتے ہوئے مبینہ طور پر ان پر میچ فکسنگ میں ملوث ہونے کا الزام بھی عائد کردیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شاہد آفریدی کا کہنا تھا کہ اتنے بڑے کرکٹر کو ایسی چھوٹی بات نہیں کرنی چاہیے تھی

شاہد آفریدی کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ اپنے وکیل کے ساتھ جاوید میانداد کے اس انٹرویو کے وڈیو کلپ کا جائزہ لے رہے ہیں اور محرم کی چھٹیوں کے بعد وہ جاوید میانداد کو قانونی نوٹس بھیجیں گے۔

واضح رہے کہ ورلڈ ٹی 20 میں پاکستانی ٹیم کی ناکامی کے بعد شاہد آفریدی کا بین الاقوامی کریئر تقریباً ختم ہوچکا ہے اور سلیکشن کمیٹی نے انہیں انگلینڈ اور ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹی ٹوئنٹی میچوں کے لیے ٹیم میں شامل نہیں کیا تھا۔

گذشتہ دنوں یہ خبریں ذرائع ابلاغ کی زینت بنیں کہ چیف سلیکٹر انضمام الحق شاہد آفریدی کے الوادعی میچ کے سلسلے میں ان سے رابطے میں ہیں تاہم پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس تجویز کو مسترد کردیا تھا۔

شاہد آفریدی کا کہنا ہے کہ وہ اپنے مستقبل کے بارے میں جلد ہی پاکستان کرکٹ بورڈ کی ایگزیکٹیو کمیٹی کے چیرمین نجم سیٹھی سے ملاقات کرنے والے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں