ڈے اینڈ نائٹ کرکٹ ٹیسٹ میچ وقت کی ضرورت ہے اور ایسے قبول کرنا ہو گا: رمیز راجہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ میچز ضروری ہو گئے ہیں‘

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان رمیز راجہ کے خیال میں ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ وقت کی ضرورت ہے اور ہمیں یہ تبدیلی قبول کرنی ہوگی۔

رمیز راجہ نے دبئی ٹیسٹ میچ کے موقع پر بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کی خاص کر ایشیائی خطے میں ضرورت محسوس ہو رہی تھی کیونکہ شائقین کی دلچسپی کم ہو رہی تھی اور لوگوں کے پاس اتنا وقت نہیں تھا۔

رمیز راجہ نے کہا کہ کرکٹ شائقین کا کھیل ہے اس میں جتنی بھی آمدنی ہوتی ہے اور جتنے بھی سپر سٹارز بنتے ہیں وہ شائقین کی وجہ سے بنتے ہیں اور اگر شائقین کی دلچسپی ہی ختم ہونے لگے تو پھر اس میں ایسی تبدیلیاں لائی جا سکتی ہیں جن سے شائقین دوبارہ اس جانب متوجہ ہوں۔

رمیز راجہ نے کہا کہ ٹیسٹ کرکٹ اب پہلے کی طرح سیزن تک محدود نہیں رہی ہے بلکہ سارا سال کھیلی جا رہی ہے اس لحاظ سے ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ میچز ضروری ہو گئے ہیں اور ہمیں اس تبدیلی کو قبول کرنا ہوگا۔

رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ ابھی یہ ابتدا ہے اور یہ دیکھا جا رہا ہے کہ گلابی گیند کا تجربہ کس حد تک کامیاب رہتا ہے اور کھلاڑیوں کا کیا ردعمل سامنے آتا ہے لیکن کوشش یہ ہونی چاہیے کہ ٹیسٹ کھیلنے والا ہر ملک اپنے شیڈول میں ڈے نائٹ ٹیسٹ میچ کو شامل کرے۔

رمیز راجہ کو یقین ہے کہ ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کرکٹ برقرار رہے گی اور یہ تاثر درست نہیں کہ اس سے روایتی ٹیسٹ کرکٹ کو کوئی خطرہ ہے۔

اسی بارے میں