آسٹریلیا میں محمد حفیظ کا بائیو مکینک ٹیسٹ

حفیظ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption محمد حفیظ انگلینڈ کے دورے کے بعد سے پاکستانی ٹیم کا حصہ نہیں ہیں

غیرقانونی بولنگ ایکشن کی وجہ سے آئی سی سی کی پابندی کا شکار ہونے والے پاکستانی آل راؤنڈر محمد حفیظ نے آسٹریلیا میں بایو مکینک ٹیسٹ دے دیا ہے۔

جمعرات کو برسبین میں ٹیسٹ دینے کے بعد ٹوئٹر پر محمد حفیظ نے کہا کہ وہ اپنا ایکشن کلیئر ہونے کے سلسلے میں پرامید ہیں۔

36 سالہ محمد حفیظ کا بولنگ ایکشن پہلی بار نومبر2014 میں پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان ابوظہبی میں کھیلے گئے ٹیسٹ میچ میں رپورٹ ہوا تھا۔

انھوں نے اپنے بولنگ ایکشن کا پہلا بائیو مکینک ٹیسٹ اپریل 2015 میں انڈیا کے شہر چنئی کی لیبارٹری میں دیا تھا جہاں ان کا بولنگ ایکشن کلیئر قرار دیا گیا تھا۔

تاہم جون 2015 میں وہ دوسری مرتبہ اس وقت مشکوک بولنگ ایکشن کی زد میں آگئے جب پاکستان اور سری لنکا کے درمیان گال میں کھیلے گئے ٹیسٹ میچ کے امپائرز نے ان کے بولنگ ایکشن کے بارے میں آئی سی سی کو رپورٹ کر دی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

آئی سی سی کے قواعد وضوابط کے تحت اگر کوئی بولر ایک سال میں دو بار مشکوک بولنگ ایکشن کی زد میں آجائے تو اس پر ایک سالہ پابندی عائد ہو جاتی ہے۔

محمد حفیظ پر عائد پابندی جولائی 2016 میں ختم ہو گئی تھی تاہم گذشتہ کچھ عرصے گھٹنے کی تکلیف میں مبتلا رہنے کی وجہ سے وہ اپنے بولنگ ایکشن کا بایو مکینک ٹیسٹ نہیں کروا سکے تھے۔

محمد حفیظ انگلینڈ کے دورے کے بعد سے پاکستانی ٹیم کا حصہ نہیں ہیں۔

ویسٹ انڈیز کے خلاف شارجہ میں کھیلے گئے سہ روزہ میچ میں انھیں موقع دیا گیا تھا لیکن وہ دونوں اننگز میں قابل ذکر سکور نہ کر سکے۔

اسی بارے میں