پاکستانی بیٹنگ بکھر گئی، 97 رنز پر8 آؤٹ

آسٹریلوی کھلاڑی تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption آسٹریلیا کی جانب سے ہیزل وڈ اور مچل سٹارک نے تین، تین جب کہ جیکسن برڈ نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا

پاکستانی کرکٹ ٹیم اپنے بیٹسمینوں کی انتہائی مایوس کن کارکردگی کے سبب برسبین ٹیسٹ میں شدید دباؤ کا شکار ہوگئی ہے۔

دوسرے دن کھیل ختم ہونے پر صرف 97 رنز پر اس کی 8 وکٹیں گرچکی تھیں۔

فالوآن سے بچنے کے لیے اسے اب بھی 133 رنز درکار ہیں لیکن اس کی دو وکٹیں باقی رہتی ہیں۔

پاکستانی ٹیم کو پہلا دھچکہ مچل اسٹارک نے پہنچایا جنہوں نے اظہرعلی کو سلپ میں عثمان خواجہ کے ہاتھوں کیچ کرایا۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

برسبین میں سمتھ کی سنچری، آسٹریلیا کے 288 رنز

ہیزل ووڈ نے لگاتار گیندوں پر بابراعظم اور یونس خان کو پویلین کی راہ دکھا دی۔

یونس خان اپنے ٹیسٹ کریئر میں چوتھی مرتبہ پہلی ہی گیند پر آؤٹ ہوکر گولڈن ڈک کا شکار ہوئے۔

وہ ان دنوں بہت بری فارم میں ہیں جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ چھ اننگز میں وہ صرف سولہ رنز بنانے میں کامیاب ہوسکے ہیں۔

مصباح الحق نے بھی غیرذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے چار رنز کے انفرادی اسکور پر جیکسن برڈ کی گیند پر سلپ میں رینشا کو کیچ تھما دیا۔

اسد شفیق کی مایوس کن بیٹنگ کا سلسلہ جاری رہا اور وہ بھی صرف دو رنز بناکر اسٹارک کی گیند پر سلپ میں عثمان خواجہ کو کیچ دے گئے۔

اوپنر سمیع اسلم سو گیندوں پر بائیس رنز بناکر برڈ کی گیند پر وکٹ کیپر ویڈ کے ہاتھوں کیچ ہوئے تو پاکستان کا اسکور چھ وکٹوں پر صرف56 رنز تھا۔

وہاب ریاض اور یاسر شاہ بھی بڑی آسانی سے ہیزل ووڈ اور اسٹارک کے قابو میں آگئے۔

ایک مرحلے پر پاکستانی ٹیم نے 7 وکٹیں صرف 24 رنز کے اضافے پر گنوائیں۔

مچل اسٹارک اور ہیزل ووڈ نے تین تین وکٹیں حاصل کیں۔ برڈ دو کھلاڑی آؤٹ کرنے میں کامیاب رہے۔

اس سے قبل آسٹریلوی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 429 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی۔

کپتان اسٹیون اسمتھ کے بعد پیٹر ہینڈس کومب نے بھی سنچری سکور کرڈالی۔

آسٹریلوی ٹیم نے 288 رنز تین کھلاڑی آوٹ پر پہلی اننگز شروع کی اور سات وکٹیں اسکور میں 141 رنز کا اضافہ کرنے میں کامیاب ہوئیں۔

محمد عامر اور وہاب ریاض نے گابا کی تیز وکٹ سے فائدہ اٹھاتے ہوئے عمدہ بولنگ کرتے ہوئے چار چار وکٹیں حاصل کیں لیکن ایک بار پھر خراب فیلڈنگ نے میزبان ٹیم کو بڑے اسکور تک پہنچنے کا موقع فراہم کردیا۔

کپتان اسمتھ جو پہلے دن دو مرتبہ آؤٹ ہونے سے بال بال بچے تھے 129 کے اسکور پر بھی آؤٹ ہونے سے بچ گئے جب یاسر شاہ کی گیند پر لانگ آف پر محمد عامر نے کیچ گرادیا۔

یاسر شاہ کی بدقسمتی کہ ان کی گیند پر اظہرعلی نے شارٹ لیگ پر میڈنسن کا کیچ بھی ڈراپ کردیا۔

اسمتھ 130 رنز بناکر وہاب ریاض کی گیند پر سرفراز احمد کے ہاتھوں کیچ ہوگئے۔

اسی کامبی نیشن نے میڈنسن کی وکٹ بھی حاصل کی لیکن پاکستانی بولرز پیٹرہینڈس کومب کو قابو نہ کرسکے جنہوں نے آج اپنا پہلا رن اسکور کرنے کے لیے چودہ گیندیں کھیلیں لیکن اس کے بعد وہ اپنے دوسرے ٹیسٹ میں پہلی سنچری مکمل کرنے میں کامیاب ہوگئے۔ وہ 105 رنز بناکر وہا ب ریاض کی گیند پر بولڈ ہوئے۔

اس سے قبل محمد عامر میتھیو ویڈ۔مچل اسٹارک اور ہیزل ووڈ کی وکٹیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے تھے۔

پاکستانی ٹیم کو اسوقت شدید کوفت کا سامنا کرنا پڑا جب 380 رنز پر نو وکٹیں گرنے کے بعد نیتھن لائن اور جیکسن برڈ نے آخری وکٹ کی شراکت میں 49 رنز کا اضافہ کرڈالا۔یہ شراکت یاسر شاہ نے 29 رنز بنانے والے لائن کو آؤٹ کرکے ختم کی۔

سپاٹ فکسنگ میں پانچ سالہ پابندی ختم ہونے پر انٹرنیشنل کرکٹ میں واپس آنے کے بعد محمد عامر پہلی بار اننگز میں چار وکٹیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

متعلقہ عنوانات