راجر فیڈرر آسٹریلین اوپن کے فائنل میں پہنچ گئے

راجر فیڈرر تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption 35 سالہ فیڈرر ٹینس سے چھ ماہ کی دوری کے بعد اپنا پہلا ٹورنامنٹ کھیل رہے ہیں

سابق عالمی نمبر ایک اور سب سے زیادہ گرینڈ سلیم مقابلے جیتنے کا اعزاز رکھنے والے سوئٹزرلینڈ کے راجر فیڈرر آسٹریلین اوپن کے فائنل میں پہنچ گئے ہیں۔

35 سالہ فیڈرر ٹینس سے چھ ماہ کی دوری کے بعد اپنا پہلا ٹورنامنٹ کھیل رہے ہیں اور انھیں اس مرتبہ درجہ بندی میں 13واں نمبر دیا گیا تھا۔

جمعرات کو کھیلے جانے والے سیمی فائنل میں فیڈرر نے اپنے ہم وطن سٹینسیلاس واورنکا کو ایک سخت مقابلے کے بعد دو کے مقابلے میں تین سیٹس سے شکست دی۔

تجربہ کار فیڈرر نے پہلا سیٹ سات پانچ اور دوسرا چھ تین کے سکور سے جیتا تو لگ رہا تھا کہ یہ سیمی فائنل ایک یکطرفہ مقابلہ ثابت ہو سکتا ہے۔

تاہم اس موقع پر وارونکا کھیل میں واپس آئے اور اگلے دونوں سیٹس میں انھوں نے فیڈرر کا جم کر مقابلہ کیا اور یہ سیٹ چھ ایک اور چھ چار سے جیت لیے۔

میچ برابر کرنے کے بعد وارونکا تھکے تھکے دکھائی دے رہے تھے اور پھر پانچویں اور فیصلہ کن سیٹ میں فیڈرر کا تجربہ ان کے کام آیا اور وہ چھٹی گیم میں وارونکا کی سروس بریک کرنے میں کامیاب رہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فیڈرر نے اپنے ہم وطن سٹینسیلاس واورنکا کو ایک سخت مقابلے کے بعد دو کے مقابلے میں تین سیٹس سے شکست دی

اس برتری کے بعد فیڈرر نے پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا اور یہ سیٹ چھ تین سے جیت کر فائنل میں جگہ بنا لی۔

فتح کے بعد ان کا کہنا تھا کہ ’میں نہیں جانتا کہ میں نے کتنے بریک پوائنٹ بچائے۔ مجھے لگا تھا کہ پانچویں سیٹ میں سٹین کو بیس لائن پر برتری تھی اس لیے مجھے جارحانہ انداز میں کھیلنا ہوگا۔‘

انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’میں نے کبھی خواب میں بھی نہیں سوچا تھا کہ میں اس آسٹریلین اوپن میں اس مرحلے تک پہنچ پاؤں گا۔ یہ انتہائی خوبصورت اور شاندار چیز ہے۔ میں بہت خوش ہوں۔‘

مردوں کا دوسرا سیمی فائنل جمعے کو سپین کے رافیل ندال اور بلغاریہ کے گریگور دیمیتروو کے مابین کھیلا جائے گا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں