’مصباح کی کپتانی، پاکستانی کرکٹ کے بڑوں میں اختلاف‘

مصباح تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کے مستقبل کا فیصلہ کرنے کے لیے پاکستانی کرکٹ کی چار اہم شخصیات نے جمعرات کو دبئی میں ایک غیرمعمولی ملاقات کی ہے۔

اس ملاقات میں پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین شہریارخان، پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ مکی آرتھر، چیف سلیکٹر انضمام الحق اور کپتان مصباح الحق شریک ہوئے۔

بی بی سی کو معلوم ہوا ہے کہ پاکستانی کرکٹ کے تین بڑے مصباح الحق کے بارے میں مختلف رائے رکھے ہوئے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین شہریارخان اور ہیڈ کوچ مکی آرتھر چاہتے ہیں کہ ویسٹ انڈیز کے دورے میں مصباح الحق کو ہی کپتان برقرار رکھا جائے اور اس کے بعد انہیں بین الاقوامی کرکٹ سے رخصت کرکے نئے کپتان کی تقرری کردی جائے۔

لیکن انضمام الحق کا خیال ہے کہ نئے کپتان کی تقرری ویسٹ انڈیز کے دورے کے لیے ہی کردی جائے۔ دوسرے لفظوں میں وہ مصباح الحق کو کپتان برقرار رکھنے کے حق میں دکھائی نہیں دیتے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ چیف سلیکٹر تینوں فارمیٹس میں ایک ہی کپتان کی تقرری کے حق میں بھی ہیں۔

تاہم پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین کا خیال ہے کہ تینوں فارمیٹس میں سرفراز احمد کو کپتان بنانے سے سرفراز پر غیر ضروری دباؤ آ جائے گا لہٰذا فی الحال انہیں ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے تک ہی محدود رکھا جائے۔

مصباح الحق کی ریٹائرمنٹ کے بعد نئے کپتان کے طور پر یونس خان کا نام بھی پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین کے سامنے رکھا گیا ہے کہ انہیں ایک سال تک کے لیے کپتان مقرر کردیا جائے۔

واضح رہے کہ یونس خان دوبارہ کپتان بننے کی خواہش ظاہر کرچکے ہیں حالانکہ وہ ماضی میں شہریار خان کے دور ہی میں اچانک کپتانی چھوڑ کر سب کو حیران اور خود شہریار خان کو مایوس کرچکے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں