’سپر لیگ نوجوان کرکٹروں کے لیے فائدہ مند‘

مصباح الحق تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ پاکستان سپر لیگ نے نوجوان کرکٹروں کو اپنی صلاحیتوں کے اظہار کا بھرپور موقع فراہم کیا ہے۔

مصباح الحق نے جو پاکستان سپر لیگ کھیلنے والی اسلام آباد یونائٹڈ کے کپتان ہیں، بی بی سی اردو کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ پاکستان سپر لیگ میں ایمرجنگ کیٹگری بڑی اہم ہے جس میں شامل ہر نوجوان کھلاڑی نے لازمی طور پر کھیلنا ہے۔

مصباح الحق نے حسن علی، محمد نواز اور محمد اصغر کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ صرف ایک سپر لیگ کھیلنے کے بعد ان کرکٹروں کی کارکردگی میں غیرمعمولی بہتری آئی ہے۔ یہ تینوں اسی ایونٹ سے سامنے آئے اور آج وہ اپنی اپنی ٹیموں کے اہم کھلاڑی بن چکے ہیں۔

حسن علی اور محمد نواز اس وقت پاکستانی ٹیم کا حصہ ہیں اور حسن علی نے انٹرنیشنل کرکٹ میں بھی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔

مصباح الحق نے اسلام آباد یونائیٹڈ میں شامل شاداب خان اور عماد بٹ کے بارے میں کہا کہ یہ دونوں نہ صرف اچھے بولر ہیں بلکہ اچھے بیٹسمین اور مستعد فیلڈر بھی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ نوجوان کرکٹروں کو اگر سپر لیگ میں زیادہ سے زیادہ میچ کھیلنے کو ملے تو وہ آگے چل پاکستانی ٹیم کے کام آ سکیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption نوجوان فاسٹ بولر حسن علی پی ایس ایل 1 میں عمدہ کارکردگی دکھانے کے بعد قومی کرکٹ ٹیم میں جگہ بنانے میں کامیاب ہوئے ہیں

مصباح الحق نے شرجیل خان اور خالد لطیف کی معطلی کے بارے میں کہا کہ اس طرح کے واقعے سے ٹیم یقیناً متاثر ہوتی ہے لیکن وہ اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ اچھا سکواڈ ہی ٹورنامنٹ میں کامیابی حاصل کرتا ہے اور ان کی ٹیم نے اتنا کچھ ہونے کے باوجود کوئٹہ گلیڈی ایٹرزکے خلاف میچ جیتا۔

انھوں نے سیم بلنگز کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ انھوں نے زبردست اننگز کھیلی۔ ’سب سے اہم بات یہ ہے کہ انھوں نے میچ کو جیت پر ختم کیا، یہ ایک پختہ اننگز تھی جس نے میچ اسلام آباد یونائٹڈ کے حق میں کر دیا۔‘

واضح رہے کہ سیم بلنگز نے آٹھ چوکوں اور تین چھکوں کی مدد سے78 رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔

ان کی اس اننگز کی بدولت اسلام آباد نے پانچ گیندیں قبل ہی مطلوبہ سکور پورا کرتے ہوئے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو پانچ وکٹوں سے شکست دی۔