201 رنز کے تعاقب میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے لاہور قلندرز کو پانچ وکٹوں سے ہرا دیا

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ PSL
Image caption کیون پیٹرسن نے ناقابل شکست 88 رنز بنا کر اپنی ٹیم کی فتح میں مرکزی کردار ادا کیا

متحدہ عرب امارات کے شارجہ کرکٹ سٹیڈیم میں جاری پاکستان سپر لیگ سیزن ٹو کے گیارہویں میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نےلاہور قلندرز کے خلاف 201 رنز کے بڑے ہدف کو شاندار بیٹنگ کر کے عبور کر لیا۔

اس جیت کے ساتھ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز پانچ میچوں میں سات پوائنٹس کے ساتھ سر فہرست ہو گئی ہے۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کیون پیٹرسن نے ٹورنامنٹ کے پہلے چار میچوں میں صرف تین رنز بنائے تھے لیکن آج وہ اپنی ٹیم کے مسیحا بن گئے اور صرف 42 گیندوں پر 88 رنز بنا کر اپنی ٹیم کو فتح سے ہمکنار کرایا۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے کپتان سرفراز احمد نے کیون پیٹرسن کا بھرپور ساتھ دیا اور آٹھ اوورز میں 101 رنز کی شراکت کر کے ایک تقریباً ناممکن سکور کے تعاقب کو ممکن بنا دیا۔

سرفراز 25 گیندوں پر 45 رنز بنا کر جیت سے دس رنز پہلے آؤٹ ہوگئے لیکن بعد میں آنے والے انور علی نے تین گیندوں پر 12 رنز بنا کر میچ ختم کر دیا۔

چوتھے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی تھسارا پریرا تھے جو 1 رن بنا کر کیچ ہو گئے۔

رائل روسو نے اپنی فارم برقرار رکھی اور کیون پیٹرسن کے ساتھ مل کر 57 رنز کی شراکت جمائی لیکن ان کو محمد عرفان جونیئر نے 33 رنز پر آؤٹ کر دیا۔

سعد نسیم پانچ رنز بنا کر سہیل تنویر کی گیند پر آؤٹ ہونے والے پہلے کھلاڑی تھے۔ ان کے بعد احمد شہزاد بھی 22 رنز کے مجموعی سکور پر آؤٹ ہو گئے۔

اس سے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے لاہور قلندرز کی ٹیم نے اپنی اننگز 200 رنز تین کھلاڑی آؤٹ پر ختم کی اور اس سال کے ٹورنامنٹ کا سب سے بڑا سکور بنا دیا۔

یاد رہے کہ پچھلے سال ہونے والے پی ایس ایل میں لاہور قلندرز نے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے خلاف 201 رنز بنائے تھے لیکن وہ میچ ہار گئے تھے۔ چند روز قبل پشاور زلمی کے خلاف لاہور قلندرز کی ہی ٹیم پی ایس ایل کی تاریخ کے قلیل ترین سکور 59 رنز پر آؤٹ ہو گئی تھی۔

قلندرز کی اننگز کے خاتمے تک کیمرون ڈلپورٹ اور محمد رضوان نے صرف سات اوورز میں 77 رنز کی ناقابل شکست شراکت قائم کی اور پہاڑ جیسا سکور کرنے میں مدد دی۔

تیسری وکٹ اس وقت گری جب فخر زمان 47 رنز بنا کر ذوالفقار بابر کی گیند پر آؤٹ ہوگئے۔

عمر اکمل آؤٹ ہونے والے دوسرے کھلاڑی تھے جو 17 رنز بنا کر کیچ ہو گئے۔

جیسن رائے نے نہایت برق رفتاری سے کھیلتے ہوئے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے بولرز کو آڑے ہاتھ لیا اور صرف 24 گیندوں پر اپنی نصف سنچری مکمل کی لیکن سپنر حسن خان کی بال پر وہ 51 رنز بنا کر بولڈ ہو گئے۔

قلندرز کی نئی اوپننگ جوڑی نے 77 رنز کی شراکت قائم کی تھی۔

قلندرز نے اپنی اوپننگ جوڑی تبدیل کر کے فخر زمان کو جیسن رائے کے ساتھ بھیجا تھا جبکہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے اسد شفیق کی جگہ سعد نسیم کو ٹیم میں شامل کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ PSL
Image caption لاہور قلندرز کو پہلی دو وکٹیں جلد مل گئیں تھیں اور لگ رہا تھا کہ وہ میچ جیت جائیں گے

ٹورنامنٹ میں آج کے دوسرے میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ کا مقابلہ پشاور زلمی سے ہوگا جو کہ پاکستان کے مقامی وقت کے مطابق رات 9 بجے شروع ہوگا۔

پی ایس ایل سیزن ٹو میں اب تک دس میچ کھیلے جا چکے ہیں اور ہر ٹیم نے پہلے چار میچز کھیل لیے ہیں۔ پوائنٹس ٹیبل پر سر فہرست پشاور زلمی ہیں جن کو رن ریٹ کی بنا پر کوئٹہ گلیڈی ایٹرز پر سبقت ہے۔

ان دونوں ٹیموں کے پانچ پوائنٹس ہیں۔ لاہور قلندرز اور اسلام آباد یونایئٹڈ چار پوائنٹس کے ساتھ بالترتیب تیسرے اور چوتھے نمبر پر موجود ہیں اور ان دونوں میں بھی رن ریٹ کی بنیاد پر فرق ہے۔

کراچی کنگز نے کل رات کے میچ میں فتح حاصل کر کے ٹورنامنٹ میں اپنا جیت کا کھاتا کھولا اور اب تک ان کے صرف دو پوائنٹس ہیں۔

خیال رہے کہ حیران کن طور پر ٹورنامنٹ میں اب تک کھیلے گئے تمام میچوں میں ٹاس جیتنے والی ہر ٹیم نے پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا ہے۔