سخت سکیورٹی میں خواتین کے کھیلوں کا آغاز

Image caption یہ دوسری مرتبہ ہے کہ خیبرپختونخوا میں ان کھیلوں کا انعقاد کیا گیا ہے (فائل فوٹو)

پاکستان کے صوبے خیبر پِختونخوا کے شہر کوہاٹ میں سخت سکیورٹی میں خواتین کے کھیلوں کا آغاز ہوگیا ہے۔

23 سال سے کم عمر کھلاڑیوں کے ان کھیلوں میں 450 ایتھلیٹ حصہ لے رہی ہیں۔

کوہاٹ سپورٹس کامپلیکس میں سخت سکیورٹی انتظامات میں ان کھیلوں کی افتتاحی تقریب منعقد ہوئی۔

اس رنگا رنگ افتتاحی تقریب میں مخـتلف کالجوں کے پرنسپل اور اساتذہ سمیت حاضرین کی ایک بڑی تعداد موجود تھی۔

ان کھیلوں میں 450 ایتھلیٹ 13 مختلف مقابلوں میں حصہ لیں گی جن میں ایتھلیٹکس، باسکٹ بال، بیڈمنٹن، کرکٹ، جُوڈو، ہینڈ بال، والی بال، ٹیبل ٹینس، بیس بال، سکواش، ہاکی، رسہ کشی اور نیٹ بال شامل ہیں۔

کھیلوں کی افتتاحی تقریب کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے مہمانِ خصوصی ڈپٹی کمشنر کوہاٹ محمد کمال خان کا کہنا تھا کہ 'ہم دنیا کو امن کا پیغام بھیجانا چاہتے ہیں۔'

ان کا کہنا تھا کہ یہ بات خوش آئند ہے کہ صوبے کے مختلف اضلاع سے خواتین کی ایک اچھی خاصی تعداد ان کھیلوں میں حصہ لے رہی ہے اور یہ کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ مختلف اضلاع میں خواتین کو بھی کھیلوں کی وہی سہولیات فراہم کی جائیں جو مردوں کو حاصل ہیں۔

23 سال سے کم عمر کھلاڑیوں کے ان کھیلوں کو مسلسل دوسری مرتبہ منععد کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں