امریکہ: جنسی استحصال کے الزامات کے بعد جمناسٹکس کے صدر کا استعفی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سٹیو پینی نے 199 میں امریکی جمناسٹک میں شمولیت اختیار کی تھی اور 2005 میں انھیں ادارے کا صدر مقرر کیا گيا تھا

امریکہ میں جمناسٹکس ٹیم کے ایک ڈاکٹر پر جنسی استحصال کے الزامات کے بعد فیڈریشن نے اس معاملے پر جو رویہ اپنایا اس پر تشویش کی وجہ سے ادارے کے صدر نے استعفی دے دیا ہے۔

جمناسٹکس فیڈریشن کے صدر سٹیو پینی نے ان الزامات کے بعد استعفی دیا ہے کہ فیڈریشن نے جنسی استحصال کے دعوؤں پر خاطر خواہ توجہ نہیں دی۔

ایک مقامی اخبار 'انڈيانا پولس سٹار نیوزپیپر' نے دعوی کیا ہے کہ کم سے کم 368 امریکی جمناسٹس نے جنسی استحصال کے الزامات عائد کیے ہیں۔

فیڈریشن کے صدر سٹیو پینی نے استعفی دینے کے بعد ایک بیان میں کہا ہے کہ 'ان جنسی بے ضابطگیوں کے واقعات کی معلومات سے مجھے کافی تکلیف پہنچی ہے۔'

'مجھے اس بات سے کراہت محسوس ہوتی ہے کہ نوجوانوں کا اس طرح سے استحصال کیا جائے گا۔'

انھوں نے مزید کہا: 'سربراہ کی حیثیت سے استعفی دینے کے میرے فیصلے کا مقصد اس وقت امریکی جمناسٹکس کے مفادات حمایت کرنا ہے۔'

جمناسٹکس ٹیم کے سابق ڈاکٹر لیری نیسر اس وقت بچوں کی فحش فلمیں بنانے اور ان کاجنسی استحصال کرنے کے الزام میں پولیس کی حراست میں ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں