ایف آئی اے سے تحقیقات کے لیے نہیں کہا: کرکٹ بورڈ

محمد عرفان تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption فاسٹ بولر محمد عرفان اور بیٹسمین خالد لطیف نے پیر کے روز ایف آئی اے کے سامنے پیش ہوکر اپنے بیانات ریکارڈ کرائے

پاکستان کرکٹ بورڈ نے واضح کردیا ہے کہ اس نے پی ایس ایل سکینڈل میں مبینہ طور پر ملوث کرکٹرز کے خلاف تحقیقات کے لیے ایف آئی اے کو کوئی بھی باضابطہ درخواست نہیں کی گئی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد کے مطابق ایف آئی اے سے پاکستان کرکٹ بورڈ نے باضابطہ درخواست نہیں کی کہ وہ ان کرکٹرز کے خلاف تحقیقات کرے البتہ ایف آئی اے سے صرف اتنا کہا گیا تھا کہ وہ ان کرکٹرز کے موبائل فون میں موجود ریکارڈ کے بارے میں اپنے وسائل کی مدد سے تصدیق کرے ۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے یہ وضاحت ایسے وقت سامنے آئی ہے جب ایف آئی اے نے کرپشن میں مبینہ طور پر ملوث کرکٹرز کے خلاف تحقیقات شروع کررکھی ہیں اور اس سلسلے میں دو کرکٹرز خالد لطیف اور محمد عرفان نے پیر کے روز ایف آئی اے کے سامنے پیش ہوکر اپنے بیانات ریکارڈ کرائے ۔

٭ ’کرپٹ کرکٹرز پر ہمیشہ کے لیے دروازے بند ہونے چاہیئں‘

٭ میچ فکسنگ تحقیقات، برطانیہ میں بھی دو افراد گرفتار

شاہ زیب حسن اور شرجیل خان منگل کے روز ایف آئی اے کے سامنے پیش ہونگے۔

واضح رہے کہ پاکستان سپر لیگ سکینڈل میں پاکستان کرکٹ بورڈ کی اپنی تحقیقات اور اس ضمن میں ٹربیونل بنائے جانے کے بعد وزارت داخلہ بھی خاصی متحرک ہوچکی ہے اور اس نے بھی کرکٹرز کے خلاف تحقیقات کا اعلان کررکھا ہے اور کرپشن سکینڈل میں ملوث پانچ کرکٹرز کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈال دیے گئے ہیں۔

اسی بارے میں