پی ایس ایل سپاٹ فکسنگ: شرجیل خان پر فرد جرم عائد

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سات رکنی اینٹی کرپشن ٹریبونل نے سپاٹ فکسنگ کے معاملے میں اپنی ابتدائی سماعت جمعے سے لاہور میں نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں شروع کر دی ہے۔

پی سی بی کے وکیل نے کھلاڑی شرجیل خان پر لگائے گئے الزامات پڑھے جس کے تحت شرجیل خان نے پی سی بی کے انسداد کرپشن ضابطہ اخلاق کی پانچ شقوں کی خلاف ورزی کی ہے۔

سپاٹ فکسنگ: پانچ کھلاڑیوں کےنام ای سی ایل میں شامل

ایف آئی اے سے تحقیقات کے لیے نہیں کہا: کرکٹ بورڈ

پی ایس ایل سکینڈل ، شاہ زیب حسن بھی معطل

جمعے کو پی سی بی کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق اینٹی کرپشن ٹریبونل نے دونوں فریقین سے مشاورت کے بعد سماعت کے طریقہ کار اور دورانیہ کا ضابطہ اخلاق کے مطابق تعین کیا۔

پی سی بی شرجیل خان پر لگائے جانے والے الزامات کی تفصیلات اور ان کے ثبوت 14 اپریل تک جمع کرائے گا جبکہ شرجیل خان کو ان الزامات کے جوابات جمع کرانے کے لیے پانچ مئی تک کی مہلت دی گئی ہے۔ سماعت کا آخری حصہ 15 مئی سے شروع ہوگا۔

پاکستان سپر لیگ سیزن ٹو میں سپاٹ فکسنگ کیس میں ملوث دوسرے کھلاڑی خالد لطیف طبیعت کی ناسازی کے باعث پی سی بی کے ٹریبونل کے سامنے پیش نہ ہو سکے اور ان سے متعلق سماعت 31 مارچ تک ملتوی کر دی گئی۔

واضح رہے کہ اس سال فروری میں کھیلے جانے والی پاکستان سپر لیگ کے سیزن ٹو میں اسلام آباد یونائیٹڈ کے کھلاڑی شرجیل خان اور خالد لطیف پر سپاٹ فکسنگ کا الزام لگایا گیا تھا اور اس کے بعد دونوں کھلاڑیوں نے ٹورنامنٹ میں مزید شرکت نہیں کی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں