’قبائلیوں کے چہروں پر خوشی چاہتا ہوں‘

پاکستان سپر لیگ کی فاتح ٹیم پشاور زلمی نے قبائلی علاقوں میں امن کے فروغ کے لیے پہلی مرتبہ فاٹا سپر لیگ کے نام سے ایک ٹی ٹونٹی کرکٹ ٹورنامنٹ کے انعقاد کا اعلان کیا ہے جس میں قومی کرکٹ ٹیم کے سٹار کھلاڑی بھی شرکت کریں گے۔

پشاور زلمی کے مالک جاوید آفریدی نے بی بی سی کو بتایا کہ فاٹا سپر لیگ یا ایف ایس ایل کا انعقاد 3 سے 13 اپریل کے درمیان ہوگا اور اس کے لیے تمام تر تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ لیگ میں سات قبائلی ایجنسیوں سے 24 ٹیمیں شرکت کریں گی جبکہ مقابلوں کا انعقاد قبائلی علاقوں باجوڑ، خیبر، کرم اور وزیرستان میں بیک وقت کیا جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں جاوید آفریدی نے کہا کہ گذشتہ بیس برس کے دوران قبائلی عوام نے جنگ و جدل کے سوا کچھ نہیں دیکھا اور وہ نہ صرف اس کا نشانہ بنے بلکہ انہیں گھر بار بھی چھوڑنا پڑا۔ ان کے مطابق فاٹا سپر لیگ کے انعقاد سے وہ قبائلی عوام کے چہروں پر خوشی دیکھنا چاہتے ہیں جو ان کی ایک دلی خواہش رہی ہے۔

جاوید آفریدی نے کہا کہ اس سپر لیگ کےانعقاد کا مقصد فاٹا میں پائیدار امن کو فروغ دینا اور ان علاقوں کے حوالے سے مثبت تاثر کو دنیا کے سامنے اجاگر کرنا ہے۔

جاوید آفریدی نے مزید بتایا کہ اس لیگ کے انعقاد میں انھیں پاکستانی فوج، پولیٹکل انتظامیہ، اور قبائلی رکنِ پارلیمان کی مکمل مدد و حمایت حاصل ہے۔ ان کے مطابق زلمی فاؤنڈیشن کی کوشش ہے کہ فاٹا سمیت اس پورے خطے میں کرکٹ کو فروغ دیا جائے تاکہ مقامی ٹیلنٹ کو آگے آنے کے مواقع فراہم ہوں۔

تصویر کے کاپی رائٹ ZALMI FOUNDATION

انہوں نے کہا کہ فاٹا میں کرکٹ کا بہترین ٹیلنٹ موجود ہے اور اس ٹی ٹوئنٹی لیگ کے ذریعے ان نوجوان کرکٹرز کو اپنی صلاحیتوں کے مظاہرے کا بہترین موقع ملے گا۔

فاٹا سپر لیگ میں سات قبائلی ایجنسیوں کی 24 ٹیمیں شریک ہوں گی جنہیں چھ گروپوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ اس گیارہ روزہ لیگ میں 67 میچز کھیلے جائیں گے اور لیگ کا فائنل 13 اپریل کو کھیلا جائے گا۔

لیگ کے میچز ان میدانوں میں کھیلے جائیں گے:

جمرود سٹیڈیم، خیبر ایجنسی

پارہ چنار سٹیڈیم، کرم ایجسنی

خار سٹیڈیم، باجوڑ ایجنسی

یونس خان سٹیڈیم، میران شاہ میں

اس ٹورنامنٹ کی ہر ٹیم میں تین تین بین الاقوامی سطح پر کھیلنے والے مہان کھلاڑی شریک ہوں گے جن میں سلمان بٹ،عمر امین، محمد رضوان اور افتخار احمد سمیت ڈومیسٹک کرکٹ کے سٹار کرکٹرز بھی شامل ہوں گے۔

کرم ایجنسی سے سابق رکنِ قومی اسمبلی اور سرکردہ قبائلی ملک منیر خان اورکزئی کا کہنا ہے کہ کرم ایجنسی سے بھی تین ٹیمیں فاٹا سپر لیگ میں شرکت کر رہی ہیں، جس سے یقینی طور پر مقامی سطح پر کرکٹ کے فروغ میں مدد ملے گی۔ اُنہوں نے کہا کہ ٹورنامنٹ کے کچھ میچز کرم ایجنسی میں بھی کھیلے جائیں گے جس کے لیے نوجوان طبقہ خصوصی طور پر بہت پرجوش نظر آتا ہے۔

منیر اورکزئی کے بقول فاٹا میں اب کافی حد تک امن بحال ہو چکا ہے لہذا وہاں ایسی مثبت سرگرمیوں کی ضروت شدت سے محسوس کی جارہی ہے۔

ٹورنامنٹ کی فاتح ٹیم کو چھ لاکھ اور رنر اپ ٹیم کو تین لاکھ روپے انعامی رقم دی جائے گی جبکہ شائقین کے لیے بھی انعامات رکھے گئے ہیں۔