ایون لیوس کی عمدہ اننگز، تیسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں پاکستان کو شکست

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ AFP

ٹرینیڈاڈ اینڈ ٹوباگو میں پورٹ آف سپین کے میدان میں کھیلے جانے والے تیسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں ویسٹ انڈز نے پاکستان کو سات وکٹوں سے شکست دے دی ہے۔

ویسٹ انڈیز نے 138 رنز کا ہدف ایون لیوس کی عمدہ اننگز کی بدولت 15ویں اوور میں صرف تین وکٹوں کے نقصان پر حاصل کر لیا۔

ایون لیوس نے 51 گیندوں پر نو چھکوں اور پانچ چوکوں کی مدد سے 91 رنز کی اننگز کھیلی۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

دوسرے ٹی 20 میچ میں پاکستان کی تین رنز سے فتح

پاکستان کی پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ میں کامیابی

پاکستان کی جانب سے کوئی بھی بولر گذشتہ میچوں جیسی کارکردگی دکھانے میں کامیاب نہ ہو سکا۔ وہاب ریاض، سہیل تنویر اور شاداب خان نے ایک ، ایک وکٹ حاصل کی۔

ویسٹ انڈیز نے اپنی اننگز کا آغاز کیا تو دوسرے ہی اوور میں سہیل تنویر نے پہلی وکٹ حاصل کی جب والٹن ایک رن بنا کر کیچ آوٹ ہوگئے۔

اس کے بعد لیوس اور سیمیولز نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 56 رنز سکور کیے اور پاکستان کی میچ پر سے گرفت کمزور کر دی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

سیمیولز 18 رن بنا کر آؤٹ ہوئے۔

اس سے قبل پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اووروں میں آٹھ وکٹوں کے نقصان پر 137 رنز بنائے۔

کامران اکمل پاکستان کی جانب سے سب سے کامیاب بلے باز رہے انھوں نے 48 رنز کی اننگز کھیلی۔

اوپنر احمد شہزاد پہلی ہی اوور کی دوسری گیند ہر بولڈ ہوگئے اور ان کے فوراً بعد کریز پر آنے والے عماد وسیم بھی بنا کوئی رن بنائے سٹمپ آؤٹ ہوگئے۔

بعد میں بابر اعظم اور کامران اکمل نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 88 رنز بنائے۔ کامران اکمل اپنی نصف سنچری سے صرف دو رنز کی دوری پر کیچ آؤٹ ہوگئے۔

آؤٹ ہونے والے پانچویں پاکستانی بلے باز بابر اعظم تھے جنھوں نے 43 رنز کی اننگز کھیلی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سپنر بدری نے پہلے اوور میں دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کر دیا

شعیب ملک آؤٹ ہونے والے چوتھے کھلاڑی تھے جن کو کارلوس بریتھ وائٹ نے آؤٹ کیا۔

ویسٹ انڈیز کی جانب سے سیمیول بدری نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ ولیمز، بریتھ ویٹ نرائن اور سیمیولز نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

پاکستان کی ٹیم نے اس میچ کے لیے ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی ہے جبکہ ویسٹ انڈیز نے روومین پاول کی جگہ جیسن محمد کو ڈیبو کرنے کا موقع دیا ہے۔

خیال رہے کہ ٹی ٹوئنٹی سیریز کے پہلے دو میچوں میں پاکستان ٹیم کامیاب رہی تھی۔

پاکستان کی جانب سے اپنے کیرئیر کا آغاز کرنے والے لیگ سپنر شاداب خان نے سیریز کے پہلے دودنوں میچوں میں مین آف دی میچ کا اعزاز اپنے نام کیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں