انڈر ٹیکر نے ریسلنگ کی دنیا کو خیرباد کہہ دیا

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

نوے کی دہائی میں کشتی کی دنیا میں جلوہ گر ہونے والے مقبول ریسلر انڈر ٹیکر نے ریسلنگ کی دنیا کو خیرباد کہہ دیا ہے۔

انڈر ٹیکر اپنے ڈرامائی انداز سے اکھاڑے میں آنے کی وجہ سے بے انتہا شہرت حاصل کی۔

ان کے آنے پر روشنیاں گُل کر دی جاتی تھیں اور انھیں ایک تابوت میں بند کر کے لایا جاتا اور انھیں ’ڈیڈ مین واکنگ‘ یعنی چلتا ہوا مردہ کہہ کر پکارا جاتا تھا۔

ان کی فتح پر ختم ہونے والا میچ بھی اس لیے زیادہ دلچسپ ہوتا کہ وہ ہارنے والے حریف کو اسی تابوت میں بند کر دیتے تھے جس میں انہیں لایا جاتا۔

انڈر ٹیکر نے اپنی آخری کشتی رومن رائن سے ہارنے کے بعد ریٹائرمنٹ کا اعلان کر دیا۔

میچ ہارنے کے بعد وہ بہت دیر تک لیٹے رہے۔ بعد میں دوبارہ رنگ پر آ کر انھوں نے اپنی ٹوپی اتار کر ایک لمبی سانس بھرتے ہوئے اپنی ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook/TheUndertaker

ڈبلیو ڈبلیو ای کے آفیشل ٹوئٹر ہیڈل سے انڈر ٹیکر کی تصاویر اور ویڈیو کلپس شیئر کیے گئے اور انھیں خراجِ تحسین پیش کرتے ہوئے ان کا ریسلنگ کی دنیا کا حصہ ہونے پر شکریہ ادا کیا گیا۔

انڈر ٹیکر کا اصلی نام مارک ولیم ہے۔ سال 1984 میں ورلڈ کلاس چیمپئن شپ کشتی سے منسلک مارک ولیم 1989 میں 'مین مارک' کے طور پر ورلڈ چیمپئن شپ کشتی میں پہنچے اور وہاں سے ان کا سفر 1990 میں ورلڈ کشتی فیڈریشن پہنچا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook/TheUndertaker

لیکن سال 2004 میں وہ دوبارہ پہلے والے طریقے سے آنے لگے۔ ڈبلیو ڈبلیو ای ان کے 'سوتیلے بھائی' کین بھی نظر آئے۔

انڈرٹیکر کو ریسل مینيا میں مسلسل 21 فتوحات کے لیے یاد کیا جاتا ہے۔

سوشل میڈیا پر ان کے مداح انھیں خراجِ تحسین پیش کر رہے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ ڈبلیو ڈبلیو ای میں موجود ان کے لیے کشش اب ختم ہو گئی ہے۔

ایک مداح نے لکھا کہ ’میں انڈر ٹیکر کی کشتیاں دیکھتے بڑا ہوا اور اب یہ سب ختم ہو گیا۔‘

ایک صارف یوسف الذیودی نے لکھا ’آج میں نے ایک لیجنڈ کو ریٹائر ہوتے ہوئے دیکھا ہے اور میں جھوٹ بولوں گا اگر میں نے کہا کہ میری آنکھیں پر نم نہیں ہوئیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter