سپاٹ فکسنگ سکینڈل میں ناصر جمشید پر بھی فردِ جرم عائد

ناصر جمشید تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سپاٹ فکسنگ کے معاملے کی تحقیقات میں تعاون نہ کرنے پر سابق اوپنر ناصر جمشید پر فردِ جرم عائد کر دی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے منگل کو جاری کیے گئے بیان میں بتایا گیا ہے کہ ناصر جمشید کے خلاف پی سی بی کے انسدادِ بدعنوانی کوڈ کی شق 2.4.6 اور2.4.7 کی خلاف ورزی پر فردِ جرم عائد کی گئی ہے۔

سپاٹ فکسنگ تحقیقات: برطانیہ میں ایک اور شخص گرفتار

محمد عرفان پر ایک سال کی پابندی، دس لاکھ جرمانہ

ان شقوں کا تعلق پی سی بی سے کسی بھی تحقیقات میں بغیر کسی ٹھوس وجہ کے عدم تعاون، معلومات کی عدم فراہمی اور تحقیقات کی راہ میں رکاوٹ یا تاخیر کی وجہ بننے سے ہے۔

بیان کے مطابق ناصر جمشید کے پاس خود پر عائد الزامات کی جواب دہی کے لیے 14 دن کا وقت ہے۔

خیال رہے کہ ناصر جمشید کو برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی نے عالمی کرکٹ میں میچ اور سپاٹ فکسنگ کے معاملے میں جاری تحقیقات کے تناظر میں بھی حراست میں لیا تھا تاہم انھیں ضمانت پر رہا کر دیا گیا تھا۔

سپاٹ فکسنگ کا سکینڈل سامنے آنے کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے ناصر جمشید کو بھی انسدادِ بدعنوانی ضابطۂ اخلاق کی خلاف ورزی پر عارضی طور پر معطل کر کے تمام فارمیٹس کی کرکٹ میں حصہ لینے سے روک دیا تھا۔

منگل کو جاری کیے گئے بیان میں کرکٹ بورڈ کا یہ بھی کہنا ہے کہ کرکٹر شاہ زیب حسن کا معاملہ بھی اینٹی کرپشن ٹربیونل کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

پی سی بی کا کہنا ہے کہ اینٹی کرپشن کوڈ کی خلاف ورزی کے حوالے سے بورڈ کی تحقیقات جاری رہیں گی اور کرکٹ بورڈ اس کھیل سے بدعنوانی کے خاتمے کے لیے پرعزم ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کرکٹ بورڈ کا یہ بھی کہنا ہے کہ کرکٹر شاہ زیب حسن کا معاملہ بھی اینٹی کرپشن ٹربیونل کے حوالے کر دیا گیا ہے

واضح رہے کہ اس سال فروری میں کھیلے جانے والی پاکستان سپر لیگ کے سیزن ٹو کے آغاز پر پاکستانی کھلاڑیوں شرجیل خان، خالد لطیف، ناصر جمشید، شاہ زیب حسن خان اور محمد عرفان پر سپاٹ فکسنگ کا الزام لگایا گیا تھا۔

اس سکینڈل میں اب تک فاسٹ بولر محمد عرفان کو بُکیز سے رابطوں کے بارے میں کرکٹ بورڈ کو مطلع نہ کرنے پر ایک سال کے لیے معطل کیا جاچکا ہے اور ان پر دس لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے۔

ان کے علاوہ شرجیل خان اور خالد لطیف پر فرد جرم عائد کی جا چکی ہے جبکہ شاہ زیب حسن کو معطل کیا جا چکا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں