سرینا ولیمز اپنے ہونے والے بچے سے متعلق ’نسل پرستانہ‘ بیان پر برہم

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption سرینا ولیم نے حال ہی میں ایک تصویر پوسٹ کی ہے جس میں وہ 20 ہفتوں کی حاملہ ہیں

ٹینس اسٹار سرینا ولیمز نے کہا ہے کہ ایلی نستاسے کی جانب سے ان ہونے والے بچے کے لیے کیا جانے والا تبصرہ نسل پرستانہ ہے اور انہوں نے اس کی مکمل تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

سابق عالمی نمبر ایک کھلاڑی ایلی نستاسے کو حال ہی میں یہ کہتے ہوئے سنا گیا تھا کہ ولیمز کا بچہ ’کیا چاکلیٹ ود دودھ‘ ہوگا؟

سرینا نے ایک بیان میں کہا، ’یہ جان کر میں مایوس ہوتی ہوں کہ ہم ایک ایسے معاشرے میں رہتے ہیں جہاں ایلی نستاسے جیسے لوگ اس طرح کے نسل پرستانہ تبصرے کرتے ہیں۔‘

35 سالہ ولیمز حاملہ ہیں اور پہلی بار ماں بننے والی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ٹینس کی عالمی تنظیم نے 70ایلی نستاسے کے بیان کی تحقیقات کا حکم دیا ہے

ولیمز نے کہا، ’میں نے پہلے بھی ایسا کہا ہے اور میں پھر كہوں گی کہ یہ دنیا اتنی آگے بڑھ چکی ہے لیکن اسے ابھی اور آگے بڑھنا ہے،جی ہاں، ہم نے کئی رکاوٹوں پار کی ہیں، لیکن ابھی بہت کچھ ہونا باقی ہے۔‘

سرینا ولیمز نے کہا کہ ’کوئی بھی چیز مجھے میرے کاموں میں مجبت اور مثبت سوچ ڈالنے سے نہیں روک سکتی۔ میں حقوق کے لیے اپنی جد و جہد جاری رکھوں گی۔‘

ٹینس کی عالمی تنظیم نے 70 سالہ ایلی نستاسے کی جانب سے پیرس کانفرنس کے دوران دیئے گئے اس بیان کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔

سرینا نے نستاسے کے خلاف کارروائی کے لئے بین الاقوامی ٹینس فیڈریشن (آئئ ٹی ایف) کا بھی شکریہ ادا کیا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں